بچوں کے موٹاپے کا والدین کے درمیان طلاق سے تعلق

Fat Babies

نیو یارک(یو این پی)طلاق کے باعث بچوں میں جذباتی عدم توازن بھی موٹاپے کی ایک وجہ ہوسکتی ہیتازہ ترین تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ جن بچوں کے والدین کے مابین طلاق واقع ہوجاتی ہے، ان بچوں میں موٹاپے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔جرنل بی ایم جے اوپن میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق طلاق یافتہ والدین کے بچوں میں شادی والدین کے بچوں کی بہ نسبت موٹاپے کے ۴۵فیصد امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔لڑکوں کے حساب سے اس صورتحال کو دیکھا جائے تو یہ پتہ چلا کہ طلاق یافتہ والدین کی نرینہ اولاد میں شادی شدہ والدین کی نرینہ اولاد کے مقابلے میں موٹاپے کے امکانات ۳۶فیصد زیادہ ہوتے ہیں۔محققین نے کہا ہے کہ اس ت علق کی ممکنہ وجوہات کم آمدنی، غیر صحت مندانہ غذا پر انحصار اور گھریلو پکوان کے لیے کم وقت دینا ہے۔ طلاق کے باعث بچوں میں جذباتی عدم توازن بھی موٹاپے کی ایک وجہ ہوسکتی ہے۔تحقیق میں ۶۶۱۳ بچوں کا جائزہ لیا گیا تھا اور اس کا اہتمام ناروے کے ۷۲۱پرائمری سکولوں میں کیا گیا تھا۔ تحقیق کو نارویجن چائلڈ گروتھ سٹڈی کا نام دیا گیا اور اس کا سال ۰۱۰۲ء میں اہتمام کیا گیا تھا۔تحقیق میں بچوں کے وزن، قد اور کمر کی پیمائش کی گئی۔
Scroll To Top