رالاکوٹ کا وکیل جلاد بن گیا،کھیتوں میں کام کرتی خاتون اور اسکے بچے پر شدید تشدد،گلے میں پھندا ڈال کر گھسیٹتا رہا

aaaa

راولا کوٹ(بیورو رپورٹ)لوگوں کو انصاف فراہم کروانے والا خود جلاد بن گیا محنت کش خاتون پر وکیل کا تشدد،عورتوں کو زدوکوب کیا گیا اور ایک عورت کے گلے میں رسی ڈال کر اسے گھسیٹا گیا ،ذاتی مفادات کی خاطر حوا کی معصوم بیٹی پر ظلم کی انتہا کر دی گئی ،تفصیلات کے مطابق راولاکوٹ آزاد کشمیر کے نواحی علاقے تراڑ کھل کے علاقے منشاء آباد سے تعلق رکھنے والے پریکٹس پر مامور وکیل تنویر حسین جو تراڑ کھل کورٹ میں پریکٹس کر رہا ہے قانون کو اپنے گھر کی لونڈی سمجھنے لگا گھاس کاٹتے ہوئے محنت کش عورت کے گلے میں رسی ڈال کر اس پر بیہمانہ تشدد کیا اور ساتھ اس کے معصوم بچے کو بھی نہیں بخشا ،اس کو بھی شدید تشدد کا نشانہ بنایا گیا ،تشدد کی وجہ سے عورت اور اسکا بچہ بے ہوش ہو گیا محلے کی دیگر عورتوں کا موقع پر پہنچنا بھی موصوف کو ناگوار گزرا اور معصوموں کی جان بچانے آئی عورتوں کو بھی کالے کوٹ والے نے گالم گلوچ کر کے خوب تواضع کی ،جھگڑے کی اصل وجہ قلعاں منشاء آباد میں قبرستان کا تنازعہ بتایا جاتا ہے ،جس پر کچھ لوگ غیر قانون قابض ہونے کی کوشش کر رہے ہین جس کی وجہ سے وکیل نے خاتون کو تشدد کا نشانہ بنایا

 

Scroll To Top