انتظامیہ ڈڈیال صرف حدود بلدیہ تک محدود، صرف15ہزار شہریوں کی چیکنگ،85ہزار لاوارث

Crime

ڈڈیال( بیورورپورٹ)’’انتظامیہ ڈڈیال صرف حدود بلدیہ تک محدود ‘‘’’ شہر کی15ہزار کے قریب آبادی کے لیے چھاپے و چیکنگ جبکہ شہر کے گردو نواح میں کم و بیش85ہزار افراد لاوارث ‘‘تفصیلات کے مطابق انتظامیہ ڈڈیال عدالتوں، سرکاری دفاتر، اڈے ،شاپنگ سینٹرز اور شہر میں آمدورفت میں ان ایکشن دکھائی دیتی ہے مگر 85 ہزار لوگوں کی صحت و صفائی کا ذمہ دار کون ہے ؟ میڈیا جس میں شوشل میڈیا، پرنٹ میڈیا سمیت دیگر ذرائع ابلاغ کوکھانے کے لیے کمزور کاروائیاں کی جاتی ہیں جرائم پیشہ افراد کی بڑی تعداد اس وقت ڈڈیال شہر کے گردو نواح میں اپنا دھندہ بخوبی چلارہے ہیں جن میں سرفہرست نیم حکیم ، جعلی ڈاکٹرز، جادو ٹونہ کرنے والے پیر، محنت و مزدوری کے بھیس میں چورو ڈاکو موجود ہیں اس کے علاوہ پھیری بان اور مانگنے والے جن میں اکثریت نوجوان خواتین بھی شامل ہیں تحصیل ڈڈیال کے افسران بالا کو مکمل تحصیل ڈڈیال کے حدود دربہ سے کوئی واقفیت نہیں اگر واقفیت ہے تو صرف تحصیل ڈڈیال کے نقشہ کی حد تک وہ بھی جو ان کے دفتر میں آویزاں ہے اس کے علاوہ ڈرگ انسپکٹر سال بھر میں خانہ پوری کے لیے حدود بلدیہ میں واقع میڈیکل سٹورز اور ہسپتالوں کادورہ کرتے ہیں جبکہ باقی سات یونین کونسلوں کی عوام کا اللہ ہی حافظ ہے یہ کام آج سے نہیں بلکہ پہلے دن سے ہی جاری ہے انتظامیہ ڈڈیا ل کے پاس اس وقت نہ تو غیر ملکی اور غیر ریاستی افراد کی رجسٹریشن نہ مکمل ہے اور نہ ہی یہ علم ہے کہ اس وقت تحصیل ڈڈیال میں ان کی آمدو رفت کتنی ہے ؟ صرف مٹی پاؤ پالیسی جاری ہے اسی طرح ڈیری فارموں میں زیادہ دودھ حاصل کرنے والے انجیکشنوں کا استعمال دھڑلے سے جاری ہے میڈیکل سٹور ز سمیت ہستپالوں میں غیر معیاری ادوایات کی فرووخت بھی ہوتی ہے منظور نظر افراد کے لیے غیر پسندیدہ افراد کے خلاف ایکا دوکا کاروائی عمل میں لائی جاتی ہے جن میں سیاسی و ذاتی تعلقات استعمال ہوتے ہیں ۔

 

Scroll To Top