سانحہ ماڈل ٹاؤن پر انصاف سے پیچھے نہیں ہٹیں گے، طاہرالقادری

tahir-ul-qadri

لندن: پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری کا کہنا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن میں بدترین ریاستی دہشت گردی کا مظاہرہ کیا گیا جب کہ 20 سال بھی لگے تو انصاف سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

لندن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا تھا کہ ماڈل ٹاؤن میں بدترین ریاستی دہشت گردی کا مظاہرہ کیا گیا اور سرعام لوگوں کو قتل کیا گیا جب کہ 2 سال بعد بھی ماڈل ٹاؤن سانحہ کی رپورٹ منظرعام پرنہیں لائی گئی۔ انہوں نے کہا کہ جسٹس باقر کی رپورٹ کو چھپانے کے مقاصد سے لاعلم ہیں اور انصاف نہ ملنے پر بین الاقوامی اداروں سے رابطہ کرنا پڑا تاہم  20 سال بھی لگے تو انصاف سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

طاہرالقادری نے کہا کہ شہبازشریف اس سانحہ کے ذمہ دار نہیں تو رپورٹ کیوں شائع نہیں کی جارہی اور شہباز شریف نے خود کہا تھا اگر بات میری طرف آئی تو مستعفی ہو جاؤں گا لیکن جب حکمران خود قاتل ہوں اور قاتلوں کے محافظ ہوں توانصاف کون دے گا۔ انہوں نے کہا کہ جنہوں نے جوڈیشل کمیشن میں بیان حلفی جمع کرایا ان کو بیرون ملک بھجوایا گیا، آپریشن کی نگرانی کرنے والے ڈی آئی جی آپریشن رانا عبدالجبار کو 2 سال کے لیے باہر بھیجا گیا، خواتین کو قتل کرنے والے عبدالرحیم شیرازی کو بھی باہر بھیجا گیا اور عمر ریاض چمیہ کو بھی 2 سال کا ویزا دے کر باہر بھیج دیا گیا جب کہ کئی افسران بیرون ملک ماڈل ٹاؤن سانحہ پراسائلم کی اپیل کررہے ہیں۔

 

Scroll To Top