کشمیر چھوڑ کر کب جائیں گے،12سالہ بچے کا فوجی افسر سے سوال ،افسرلاجواب ہو گیا

kshmiri child

سری نگر(یو این پی)کپوارہ ترہگام کے مضافاتی دیہات ہرے میں اس وقت فوجی گاڑیوں کے قافلے میں فوجی آفیسر کو حیران ہونا پڑا جب12سالہ بچے نے ان سے یہ سوال کیا کہ آپ کشمیر چھوڑ کر کب جائیں گے۔سوموار کو 9سال سے لیکر 15سال کے بچے کرالپورہ کپوارہ سڑک پر دھرنا پر بیٹھے تھے اور اسلام ، آزادی کے حق میں نعرے بازی کر رہے تھے ۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہاسی دوران کرالپورہ سے ایک فوجی قافلہ کپوارہ جا رہا تھا اور جب یہ ہر ئی کے مقام پر پہنچا تو وہاں بچوں نے سڑک پر رکاوٹیں کھڑاکر کے سڑک کو بند رکھا تھا ۔ چنانچہ فوجی گاڑیوں کا قافلہ وہاں رک گیا اور ایک فوجی افسر گاڑی سے نیچے اتر گیا ۔ فوجی افسر نے دھرنے پر بیٹھے نو عمر بچوں سے تاکید کی وہ سڑک کو کھول دیں تاکہ وہ وہاں سے چلے جا ئیں۔فوجی افسر نے بچوں سے کئی سوالات پوچھے اور کہا کہ آپ کی عمر ہڑتال اور دھرنا دینے کی نہیں ہے ،آپ تعلیم حاصل کرو، تو اچھے ڈاکٹر اور انجینئر بن سکتے ہو ۔ فوجی افسر نے بچوں کو نصیحت دیکر کہا کہ اب اگر تم لوگ کوئی سوال پوچھنا چاہتے ہیں تو پوچھ سکتے ہیں جس کے بعد ایک12سالہ لڑکا اٹھا اور افسر سے کہا کہ آپ مجھے بتائے کہ آپ کشمیر چھوڑ کر کب جا رہے ہیں جس پر فوجی افسر حیران ہو کر رہ گیا اور چپ چاپ وہاں سے چلا گیا ۔

 

Scroll To Top