محکمہ برقیات آزاد کشمیر میں اصلاحات کا آغاز ، صارفین بجلی کیلئے میٹر ریڈنگ کے بغیر بل بجھوانے پر پابندی عائد ، شعبہ ریونیو کے خصوصی آڈٹ کا فیصلہ

raja nisar

مظفرآباد(بیورو رپورٹ)محکمہ برقیات آزاد کشمیر میں اصلاحات کا آغاز ، صارفین بجلی کیلئے میٹر ریڈنگ کے بغیر بل بجھوانے پر پابندی عائد ، شعبہ ریونیو کے خصوصی آڈٹ کا فیصلہ ، ٹرانسمیشن لائنوں سمیت بجلی کے انفراسٹرکچر کی تبدیلی کیلئے کورین کمپنی کے ساتھ مذاکرات فیصلہ کن مراحل میں داخل ، محکمہ برقیات سے سیاست اور سفارش کلچر کے خاتمہ کیلئے عملی اقدامات شروع ہوگئے ۔ وزارت برقیات میں شکایات کے ازالہ کیلئے باضابطہ سیل قائم کردیا گیا ۔ وزیر برقیات آزاد کشمیر حکومت راجہ نثار احمد خان نے صحافیوں کے ساتھ بات چیت کے دوران بتایا ہے کہ محکمہ برقیات آزاد کشمیر میں بنیادی اصلاحات کا آغاز کردیا گیا ہے ۔ انتہائی کم وقت میں ہر بجلی صارف کو میٹر فراہم کیا جائے گا اور آئندہ میٹر ریڈنگ کے بغیر اوسط بلوں کی ترسیل پر پابندی عائد کردی گئی ہے ۔ میٹریڈرز کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ ہر صورت میٹر ریڈنگ کرکے بلنگ کے لئے تفصیل متعلقہ شعبہ کو فراہم کرے ۔ اوسط بل قوائد کے مطابق جاری ہوسکے گا تاہم خراب میٹر کی اطلاع صارف کی ذمہ داری ہوگی ۔ اطلاع کے بعد محکمہ اولین فرصت میں متبادل میٹر فراہم کرنے یا میٹر درست کرنے کا پابند ہوگا۔ قواعد سے ہٹ کر اوسط بل جاری کرنے پر بھی پابندی عائد کردی گئی ہے ۔ میٹر ریڈنگ کے حوالے سے شکایات کا ازالہ کرینگے ۔ محکمہ برقیات میں سفارش اور سیاست کا قلع قمع کرینگے ۔ میرٹ کے نفاذ کے بغیر بہتری نہیں آسکتی ۔ محکمہ برقیات کے شعبہ ریونیو کے حوالے سے موجود شکایات کیوجہ سے فوری طور پر ہنگامی ریونیو شعبہ کا خصوصی آڈٹ کروا رہے ہیں جمع شدہ بلات کی رقوم کی منتقلی محکمہ کے اندر اہم اور سنگین ایشو ہے ۔ محکمہ کو ہدایت کی گئی ہے کہ کم سے کم وقت میں شعبہ ریونیو کا اسپیشل آڈٹ کروا کر رپورٹ پیش کریں ۔ وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف کے ویژن کے مطابق وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر کی زیر قیادت کرپشن کے خاتمہ کیلئے عملی اقدام شروع کردیئے ہیں ۔ بجلی کی ترسیل مسلسل اور یقینی بنانے کیلئے بھی کام جاری ہے ۔ بجلی کی بچت کیلئے آگہی مہم چلائیں گے ۔ دیہات کی سطح پر کمیٹیاں بنا کر صارفین کو بجلی بچت کی ترغیب دی جائے گی ۔ بجلی کا غیر ضروری استعمال ختم کروائیں گے ۔ عوام کے تعاون سے اس سلسلہ میں حوصلہ افزا نتائج کی توقع ہے ۔ اس وقت آزاد کشمیر میں کئی علاقوں میں بجلی کے پول اور ٹرانسفارمرز تنصیب کے منتظر ہیں ان کی تنصیب یقینی بنائیں گے ۔ محکمہ برقیات کے اندر عملدرآمد کیلئے ٹاسک فورس بنا رہے ہیں ۔ وزیر حکومت نے کہا کہ واپڈا کے ساتھ ٹیرف سمیت لوڈ شیڈنگ اور دیگر تصفیہ طلب معاملات حل کرنے کیلئے وزیراعظم کی سطح پر بات چیت متوقع ہے ۔ وزارت پانی و بجلی (واپڈا) کے ساتھ رابطے میں ہیں ۔ مستقل اور ہر ایک کیلئے بجلی کی فراہمی کا منصوبہ حکومت پاکستان کے پروگرام 2025کا حصہ ہے ۔ اس سلسلہ میں وفاقی وزیر احسن اقبال آئندہ چند روز میں اعلیٰ سطحی کانفرنس میں شرکت کیلئے مظفرآباد آرہے ہیں ۔ محکمہ برقیات کا مشن اچھی اور بہتر سروسز کی فراہمی ہے اور یہ کام سفارش اور سیاست ختم کرکے ہی ممکن ہے ۔ بجلی کی بچت ، شکایات کے ازالہ اور اصلاحات کے حوالے سے الیکٹرانک و پرنٹ میڈیا میں آگہی مہم چلائیں گے ۔ راجہ نثار احمد نے کہا کہ محکمہ کے اندر ڈسپلن کی بحالی کے لئے اچانک اور سرپرائز وزٹ کا سلسلہ شروع کیا ہے ۔ مظفرآباد اور مضافات کے دفاتر بجلی میں کسی بھی وقت جانے کا ارادہ ہے ۔ ایک سوال پر راجہ نثار احمد نے کہا کہ محکمہ برقیات میں غیر تربیت یافتہ عملہ بھرتی کیا جانا ہے ۔ اسسٹنٹ لائن مین کیلئے کوئی معیار اور اصول طے نہیں ۔ اب ہم نے طے کیا ہے کہ محکمہ برقیات میں اسسٹنٹ لائن مین کی تعیناتی 6ماہ کے ڈپلومہ ، فنی تربیت کے بغیر نہیں ہوگی ۔ تمام فیلڈ عملہ فنی سٹاف کو حفاظتی سامان (کٹ) مہیا کرینگے اور اس کا استعمال بھی سکھایا جائیگا۔ محکمہ برقیات ریونیو دینے والا محکمہ ہے اور اس محکمہ کے ملازمین کے مسائل حل کرنا ہماری ذمہ داری ہے ۔ تمام حلقہ جات میں متعلقہ ممبران اسمبلی کے ساتھ ملکر مسائل کے حل کی کوشش کررہے ہیں ۔ ملازمین اور صارفین کے معاملات میں کسی کو بھی تختہ مشق بنانا مقصود نہیں ۔ باہمی تعاون اور رابط سے مسائل حل ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بجلی کی پیداوار کیلئے متبادل ذرائع استعمال میں لانے کیلئے عملی اقدام شروع ہیں ۔ ہائیڈرل کیساتھ ساتھ سولر انرجی اور ونڈ انرجی کو فروغ دیا جائیگا۔ جن علاقوں میں بجلی نہیں وہاں بجلی کی فراہمی کی سکیم پر کام جاری ہے ۔ آزاد کشمیر کے دورافتادہ اور مشکل علاقوں میں جہاں بجلی دستیاب نہیں وہاں سولر انرجی کے ذریعہ روشنی دے رہے ہیں تاہم 14کروڑ روپے اگر مل جائیں تو تمام آزاد کشمیر میں بجلی کی فراہمی مکمل ہوسکتی ہے ۔ 2سال کے اندر آزاد کشمیر کے ہر گھر کو روشن کرنے کی خواہش ہے ۔ بجلی کا سارا نظام پرانا اور بوسیدہ ہے ۔ انفراسٹرکچر کی تبدیلی کی ضرورت ہے ۔ ٹرانسمیشن لائنوں سمیت ٹرانسفارمرز بھی نئے لگنے چاہئیں ۔ اس سلسلہ میں کوریا کی کمپنی کیساتھ بات چیت چل رہی ہے ۔ مذاکرات فیصلہ کن مرحلہ میں داخل ہیں ۔ جلد اچھی خبر ملے گی ۔ راجہ نثار احمد خان نے کہا کہ پرائیویٹ سیکٹر کو توانائی کے شعبہ میں سرمایہ کاری کیلئے سہولیات دینگے ۔ واپڈا کے ساتھ تنازعات کے حل او رتصفیہ طلب معاملات یکسو کرنے کیلئے ورکنگ پیپر تیار کیا جارہا ہے ۔ اس حوالے سے وزیراعظم کی سطح پر بات ہوگی اور توقع ہے کہ ٹیرف سمیت تمام معاملات خوش اسلوبی کے ساتھ طے ہوجائیں گے ۔ آزاد کشمیر حکومت ترجیحات کا تعین کرکے زبانی دعوں کے بجائے عملی کام کرنا چاہتی ہے ۔ انشاء اللہ پہلے سو دنوں کے اندر بہت کچھ نظر آئے گا۔ اگر کام کی نیت نہ ہو تو پچھلی حکومت کا گند صاف کرنے میں سال درکار ہونے کا عذر موجود ہے ۔ مگر ہم ماضی میں الجھنے کے بجائے روشن اور خوشحال مستقبل پر یقین رکھتے ہیں اور اس سلسلہ میں پرامید ہیں ۔

 

Scroll To Top