وزیر اعظم پاکستان نواز شریف کے اعلان کردہ کسان پیکج کا دائرہ کار آزادکشمیر تک بڑھانے کا اعلان

agriculture

مظفرآباد(KNI) پاکستان میں وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے اعلان کردہ 146146کسان پیکج145145 کا دائرہ کار آزاد کشمیر تک بڑھانے کے لئے اقدام شروع، وزارت زراعت و امور حیوانات نے حکومت پاکستان کے ساتھ رابطہ کر لیا۔ کھاد ، بیج ، ادویات، ٹیوب ویلزکی تنصیب ، منی ڈیمز کی تعمیر سمیت کاشتکاروں کو بلا سود قرضے دیئے جائیں گے۔دودھ اور گوشت کی پیداوار بڑھانے کے لئے فارم کلچر فروغ دیا جائے گا ۔سینئر وزیر آزاد کشمیر حکومت چوہدری طارق فاروق کی زیر صدارت محکمہ زراعت و امور حیوانات آبپاشی کے اعلیٰ سطحی اجلا س میں اہم اور انقلابی فیصلے ، زمینداروں کو قابل کاشت زمین پر کاشت کاری کے لئے زیادہ سے زیادہ سہولتیں دینے کیلئے اقدامات تجویز کئے گئے ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سینئر وزیر حکومت آزاد کشمیر چوہدری طارق فاروق نے کہا کہ جب تک زمینداروں اور کاشت کاروں کو زرعی پیداوار کے لئے سبسڈی نہیں دی جاتی بہتری ممکن نہیں ۔ زراعت دنیا کا واحد شعبہ ہے جس میں سبسڈی دی جاتی ہے ۔انڈیا کی مثال سامنے ہے مشرقی پنجاب میں سبسڈی کی وجہ سے زرعی پیداوار اس قدر بڑھ گئی ہے کہ پورے ہندوستان کی ضرورت پوری ہو رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کے صدارتی انتخابی مہم میں زراعت پر سبسڈی انتخابی مہم کا اہم حصہ ہے جو زراعت اور زرعی پیداوار کی اہمیت و افادیت کو ثابت کرتی ہے۔ہمارے ہاں زراعت نظر انداز شعبہ ہے ۔ ماضی میں اس محکمہ کو محض روزگاربیورو بنانے کی کوشش کی گئی زراعت کی ترقی اور فروغ کیلئے نہ تو کوئی پالیسی بنائی گئی اور نہ ہی عملاً اس کی حوصلہ افزائی کی گئی ہے موجودہ حکومت نے زرعی خود کفالت کے حصول کے لیے باضابطہ حکمت عملی طے کی ہے اس حوالے سے محکمہ زراعت و امور حیوانات کو جنگی بنیادوں پر کام کرنا ہے زیادہ سے زیادہ رقبہ قابل کاشت بنا کر اسے زیر کاشت لایا جائے گا۔ کسان پیکج پاکستان میں زرعی سہولیات کا موجب ہے اس کا دائرہ کار آزاد کشمیر تک بڑھائیں گے ۔ وزیر اعظم پاکستان کے ساتھ اس حوالے سے باضابطہ ملاقات کر کے ان کی خدمت میں گزارشات پیش کریں گے۔ آزاد کشمیر کے شمالی علاقے میں موسم ، پانی اور مٹی کے ساتھ آب و ہوا ایسی ہیکہ ان علاقوں میں قیمتی پھلوں اور پھولوں کی کاشت ہو سکتی ہے ۔ جبکہ جنوبی علاقوں میں گندم ، مکئی اور باجرا سمیت پھلوں اور پھولوں کی کاشت ہو سکتی ہے۔ زمیندار وں اور کاشت کاروں کو کھاد بیج ، ادویات اور ٹیوب ویل کے ساتھ کولڈ اسٹوریج کے قیام کے لئے سہولت دینا ہونگی ۔ سبسڈی دے کر آزاد کشمیر کو زرعی اعتبار سے خود کفیل ریاست بنائیں گے ۔ انہوں نے محکمہ آبپائشی پر زور دیا کہ منی ڈیمز کی تعمیر اورنہروں کے لئے منصوبہ جات بنائیںاس موقع پر سیکرٹری زراعت و مور حیوانات ڈاکٹر شہلا وقار،ڈی جی زراعت ڈاکٹر بشیر بٹ ، ڈی جی امور حیوانات ،ڈاکٹر محمد مطلوب سمیت محکمہ کے دیگر اعلی ٰ افسران بھی اجلاس میں موجود تھے۔

Scroll To Top