انسانی المیہ ایک اور کشمیری نسل کو اپنی لپیٹ میں لے چکا ہے یاسین ملک

Yasir Malik Arrest

سری نگر(یو این پی)جموں وکشمیرلبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمدیاسین ملک، جو پچھلے50روز سے سرینگر کے سنٹرل جیل میں مقید ہے ،نے کشمیر میں جاری جبر کو جمہوریت اور انسانیت کے ماتھے پر بد نما داغ سے تعبیر کرتے ہوئے کہا ہے کہ آری پاتھن ہو کر بٹہ مالو، سوئیہ بگ ہو کہ لارکی پورہ، کشمیر کا کونہ کو نہ بھارتی نوآباد یانی ذہین اور طرز عمل کا شکار ہے۔انہوں نے کہا کہ2016کے عوامی انقلاب کے دوران ایک بات ابھر کر سامنے آگئی ہے کہ مسئلہ کشمیر کی صورت میں موجود انسانی المیہ ایک اور کشمیری نسل کو اپنی لپیٹ میں لے چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کی کئی نسلیں اپنی آزادی کے لئے قربانیاں دے چکی ہے اور اب یہ سلسلہ ہماری نسل میں منتقل ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ50روز سے مسلسل کرفیو،70سے زائد بیمانہ قتل،7000لوگوں کو نشانہ بناکر زخمی کردینا،200سے زائد انسانوں کی روشنی چھین لینا اور ہزاروں افراد کو زندان کی نظر کردینا کیا کم ہے کہ اب کہا جارہا ہے کہ جبر کے اس سلسلے میں مزید شدت لائی جائے گی۔ یاسین ملک نے کہا کہ بھارت اور اسکے ریاستی حواری چائیں جو کرلے کشمیریوں کے دلوں سے آزادی کے جذبے کو نکال باہر نہی کرسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ2008ہو یا2010اور اب 2016کے قتل عام اور مظالم نے ایک با رپھر عیاں کردیا کہ بھارتی ظلم کی کلہاڑی کا دستہ کشمیری ہند نواز سیاستدان ہی بنتے ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات الگ ہے کہ پی ڈی پی کی قیادت والی حکمران حکومت میں اقتدار سے چمٹے رہنے کے لئے ظلم وجبر کی ساری حدیں پھلانگ دی ہے۔

Scroll To Top