بھارتی حکمرانوں کو اپنی عوام کش پالیسیوں کا ایک نہ ایک دن حساب دینا ہی پڑے گا؛ محمد یاسین ملک

Yaseen Malik

سری نگر(یوا ین پی) جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا ہے کہ مزید پانچ کشمیریوں کے سفاکانہ قتل، سینکڑوں لوگوں کو زخمی کردینے اور دوسرے ظلم وجبر کے واقعات نے بھارتی افواج،فورسز اور پولیس کے سفاکانہ طرز عمل کی قلعی کھول کر رکھ دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی افواج، فورسز، پولیس حکمرانوں کی ایما اور احکامات پر پرامن لوگوں کے خلاف ظلم و جبر و تشدد کا آغاز کرتے ہیں اور گولیوں، شیلوں، پیلٹوں کی بھرمار کرکے نہتے کشمیریوں کو تہہ تیغ کیا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کے خلاف قتل و غارت کا یہ سلسلہ نام نہاد حکمرانوں کے احکامات پر جاری ہے اسلئے اس قتل و غارت کی براہ راست ذمہ داری حکمرانوں کے ہی سر عائد ہوتی ہے اور قانون مکافات عمل کے تحت ان حکمرانوں کو اپنی عوام کش پالیسیوں کا ایک نہ ایک دن حساب دینا ہی پڑے گا۔ڈوڈہ، کشتوار،بھدرواہ، رام بن، بانہال، پونچھ، راجوری اور کرگل کے عوام کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہوئے محبوس فرنٹ چیئرمین نے کہا کہ جس منظم و پرامن انداز میں ان علاقوں میں رہنے والے لوگوں نے اپنے کشمیری بھایؤں کے تئیں محبت و اخوت اور یکجہتی کا اظہار کیا ہے وہ ہمارے لئے قابل رشک ہے۔ درایں اثنا شمیم احمد کی والدہ کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہارکیا گیا۔فرنٹ کے ایک ترجمان نے یاسین ملک کے حوالے سے فون پر بتایاکہ چیئرمین نے چھی اننت ناگ میں پولیس آفیسر توصیف میر کی جانب سے خواتین کی تذلیل کرنے کاسنجیدہ نوٹس لیتے ہوئے اس واقعہ کی مذمت کی ہے۔ ملک نے کہا کہ ایسے پولیس آفیسر عام شہریوں کو تشدد کانشانہ بنا کر ترقیوں کیلئے ایسا کرتے ہیں تاکہ حکام کی نظر میں ان کی قدرومنزلت بڑھے۔

Scroll To Top