کشمیر میں فوجی تھوڑے پڑ گئے،مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی عوامی تحریک کو کچلنے کے لیے اضافی فوج تعینات کرنے کا اعلان

indian army

جموں(یوا ین پی) بھارت مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی عوامی تحریک کو کچلنے کے لیے اضافی فوج تعینات کرے گا اضافی فورسز کے دستے جموں میں تعینات کیے جائیں گے ۔مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی عوامی تحریک کا دائرہ جموں خطہ کے کچھ علاقوں میں وسیع ہونے پر گہری تشویش ظاہر کرتے ہوئے بھارتی وزیر مملکت جتیندر سنگھ نے کہا کہ وزار ت داخلہ حالات کو قابو میں رکھنے کے لئے اضافی فورسز تعینات کرے گی۔جموں میں اخبار نویسوں سے بات چیت میں انہوں نے کہا کہ وادی میں پچھلے چار ہفتہ سے نامساعد حالات چل رہے ہیں لیکن دو چا رروز سے جموں خطہ ،جس میں کشتواڑ جیسے حسا س علاقے بھی شامل ہیں، میں بھی حالات خراب ہو رہے ہیں جو کہ باعث تشویش ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ معاملہ ہوم منسٹر کے نوٹس میں لایا گیا ہے اور انہوں نے یقین دلایا کہ وہاں اضافی فورسز بھیجی جائیں گی۔جتیندر سنگھ نے بتایا کہ آج ان علاقوں میں حالات معمول کے مطابق ہیں ، ضلع انتظامیہ متحرک ہو گئی ہے اور مقامی لیڈر بھی تعاؤن دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عین ممکن ہے کہ وادی کے حالات خراب کرنے میں بیرونی طاقتیں ملوث ہوں اور وہ اب جموں خطہ کے حالات کو بھی خراب کرنا چاہتی ہوں۔ بھارتی وزیر داخلہ کی حالیہ پاکستان دورہ کے لئے ستائش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ راجناتھ سنگھ نے پاکستان دورہ سے واپس آکر پارلیمنٹ میں جو بیان دیا اس کی تمام ممبران نے سیاسی وابستگیوں سے بالا تر ہو کر ستائش کی ، یہ اس بات کا بین ثبوت ہے کہ ہوم منسٹر نے اسلام آباد میں کس طرح سے حالات کا مقابلہ کیا ہے ۔جتیندر سنگھ کا کہنا تھا کہ پاکستان رفتہ رفتہ تنہا پڑتا جا رہا ہے اورعالمی برادری ہندوستان کے موقف کی تائید کر رہا ہے کہ پاکستان کی سر زمین سے کارروائیاں کرنے والے عناصر سے نپٹنا اس ملک کی ذمہ داری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان انسانی حقوق کی پامالیوں کے حوالہ سے وا ویلا کرتا ہے لیکن ان کے اپنے ہاں اس کی حالت بد تر ہے ۔

Scroll To Top