اپنی سرزمین کسی ملک کے خلاف دہشت گردی کیلئے استعمال نہیں ہونے دینگے: نواز شریف

nawaz sharif

اسلام آباد(یوا ین پی) وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ اپنی سرزمین کسی ملک کے خلاف دہشت گردی کیلئے استعمال نہیں ہونے دینگے۔ پاکستان میں دہشت گردی کے مراکز کا خاتمہ کیا جاچکا ہے اور ہم امن کے متلاشی ہیں تاہم دوستانہ تعلقات کی کوششوں کو کمزوری نہ سمجھا جائے۔اہم ممالک میں تعینات پاکستانی سفیروں کی 3 روزہ کانفرنس کے اختتامی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ آج کا پاکستان 2013 سے کہیں زیادہ پرامن ، خوشحال اورمستحکم ہے، آج دنیا کے سامنے پاکستان کا مقدمہ پیش کرنا کہیں آسان ہے جبکہ سفیرعالمی برادری کو معاشی خوشحالی اورمحفوظ سرمایہ کاری کی طرف متوجہ کرسکتے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ قومی،علاقائی ،عالمی شناخت نہ رکھنے والے ممالک بین الاقوامی سطح پر تنہا ہوجاتے ہیں، سفیر دنیا کو باورکرائیں کہ پاکستان کا شمار ابھرتی ہوئی معیشتوں میں ہورہا ہے، ہمیں اپنی اقدار کے ساتھ عالمی تہذیبی اقدار کا خیال رکھنا ہے۔ وزیراعظم نے سفیروں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ تمام معاملات پر آپ کی اپروچ درست سمت میں ہے جب کہ کچھ مسائل قابل توجہ ہیں اور انہیں حل کرنے کی ضرورت ہیں،بہتر سفارتکاری سے پاکستان روشن، محفوظ اور مستحکم ہوگا، سفیرکی کامیابی یہی ہے کہ سبز پاسپورٹ عزت اور وقارکی علامت بن جائے اورسفیردنیا میں روشن پاکستان کا تشخص اجاگر کریں۔ ان کا کہنا تھا کہ اقتصادی راہداری منصوبہ گیم چینجر کی حیثیت رکھتا ہے، اس منصوبیکو خطے میں نئے تعلقات کی بنیاد بنانا چاہتے ہیں جب کہ چین ہمارا قابل بھروسہ دوست ملک ہے، اقتصادی راہداری منصوبوں پرچین کی حکومت اورعوام کیشکر گزار ہیں اور منصوبے سے خطے میں نیا ویڑن لارہے ہیں۔ وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ کشمیرکواقوام متحدہ نے پاکستان اور بھارت کے درمیان تنازع قراردیا ہے، مسئلہ کشمیر کا حل اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق چاہتے ہیں اور دنیا کو باور کرانا ہے کہ مسئلہ کشمیر بھارت کا اندرونی معاملہ نہیں جب کہ آج کشمیرمیں آزادی کی نئی لہر پیدا ہوچکی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ خوشی ہے کہ تمام مسائل پر سفیروں کے درمیان ذہنی ہم آہنگی ہے، تصادم میں الجھنے سے سماجی اور معاشی میدان میں ترقی رک جائیگی، چاہتے ہیں پاکستان کو درپیش مسائل حل کی طرف جائیں نہ کہ مزید الجھیں اور پیچیدہ ہوں، اپنی سرزمین کسی ملک کے خلاف دہشت گردی کے لئے استعمال نہیں ہونے دیں گے، باہمی مفاد اورایک دوسرے کی خودمختاری کے احترام پریقین رکھتے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان دنیا میں دہشت گردی سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے جسے عدم استحکام، دہشت گردی سے نکال کرروشن خیال فضا میں لانا ہے، دہشت گردی کے خلاف سیکیورٹی فورسز اور عوام کی قربانیوں کی دنیا معترف ہے، نیشنل ایکشن پلان اور آپریشن ضرب عضب قوم اور ملک کی یکسوئی کا اظہار ہے۔

Scroll To Top