چوہدری اشرف نے الیکشن کا بائیکاٹ کر دیا ،پیپلز پارٹی نہ چھوڑنے کا اعلان، چوہدری مجید نے لیگی امیدوار کو سپورٹ کیا ،اشرف کا الزام

میرپور(نمائندہ عدالت) پیپلز پارٹی کے نامزد امیدوار اسمبلی حلقہ ایل اے تھری میرپور چودھری محمد اشرف نے الیکشن سے بائیکاٹ کا اعلان کر دیا ۔ صدر جماعت و وزیر اعظم چودھری عبدالمجید کی غلط پالیسوں اور میرپور سے مسلم لیگ ن کے امیدوار کی حمایت کرنے پر الیکشن سے بائیکاٹ کا فیصلہ کیا ہے ، پیپلز پارٹی نے عزت دی ہے جماعت نہیں چھوڑ ں گا ۔ تمام سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کروں گا۔ پیپلز پارٹی کے تمام کارکنوں پی واے او ،پی ایس ایف ،لیبر ونگ سب کا تہہ دل سے تعاون کرنے پر مشکور ہوں۔ میرپور کے حقوق پر کوئی کمپرومائز نہیں کر سکتا۔نانگی ہاوس میں ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے امیدوار اسمبلی چودھری محمد اشرف نے کہا کہ آج کی اس ہنگامی پریس کانفرنس کا مقصد آپ لوگوں کو حالات سے آگاہ کرنا ہے کہ میں پیپلز پارٹی میں کیوں اور کیسے شامل ہوا اور ضمنی الیکشن سے لے کر آج تک کون کون سی سازشیں ہوتی رہیں ۔ضمنی الیکشن میں وزیراعظم چوہدری عبدالمجید جو پیپلز پارٹی آزاد کشمیر کے صدر بھی ہیں۔ انھوں نے میری منتیں کیں اور کہا کہ میں پیپلز پارٹی میں شامل ہو کر بیرسٹر کے مقابلے میں الیکشن لڑوں کیونکہ پیپلز پارٹی کے پاس حلقہ میرپور سے کوئی بھی مضبوط امیدوار نہیں ہے ۔مجھ سے اس وقت میرپور کی تعمیر و ترقی کے بھی وعدے کئے گئے ۔میں نے پیپلز پارٹی میں شمولیت کا فیصلہ میرپور شہر کی بہتری کیلئے کیا۔ ضمنی الیکشن میں جو کچھ ہو ا وہ آپ لوگوں کے سامنے ہے۔ 2011 کے الیکشن کے دوران میں نے 17 ہزار ووٹ لیے تھے اور ضمنی الیکشن میں 13 ہزار ووٹ لے سکا ۔ وزیراعظم چوہدری عبدالمجید کے غلط پالیسیوں نے جہاں پیپلز پارٹی کو نقصان پہنچایا وہاں میرا بھی ووٹ بنک کم ہوا ۔ لیکن میں اس کے باوجود ہمت نہیں ہارا ۔ چوہدری عبدالمجید کی سازشیں میرے خلاف جاری رہی۔ ضمنی الیکشن میں بلدیہ کے کینسل پلاٹ بحال کرنے کا وعدہ کیا گیا تھا ۔ سٹاف کالونی کے کواٹرز کو مالکانہ حقوق پر دینے کا بھی ملازمین سے وعدہ کیا گیا لیکن ان میں سے ایک بھی وعدہ وفا نہ ہو سکا ۔ چوہدری عبدالمجید میرپور شہر کی تعمیر و ترقی اور حلقہ تھری میں پیپلز پارٹی کا دشمن ہے اس کو کسی رشتہ کے تقدس و احترام کا کوئی خیال نہیں اور نہ ہی یہ کسے رشتے کو مانتا ہے ۔جس پارٹی نے اس کو صدر جماعت بنایا اس کو ریاست کا وزیراعظم بنایا یہ اسی جماعت کے خلاف غداری کرتا رہا۔ ضمنی الیکشن سے لے کر آج جنرل الیکشن شروع ہیں اس نے میرے خلاف ہر طرح کی سازش کی اور لوگوں کو کہتا رہا کہ میں پیپلز پارٹی چھوڑ دونگا ۔کبھی کہتا کہ پارٹی ٹکٹ چوہدری اشرف کو نہیں ملے گا حالانکہ ضمنی الیکشن کے بعد نوڈیرو جب شریک چیئرمین آصف علی زرداری صاحب سے ملاقات ہوئی تو انہوں نے پوچھا کہ چوہدری اشرف میرا امیدوار تھا چوہدری مجید بتاو یہ کیوں ہارا ہے ۔ لیکن چوہدری عبدالمجید کے پاس کوئی جواب نہ تھا ۔ مجھے آصف علی زرداری صاحب نے اسی وقت کہا تھا کہ آئندہ میرا امیدار بھی چوہدری اشرف ہو گا لیکن چوہدری مجید نے میرے خلاف اسی دن سے سازشیں شروع کر دیں ۔میرپور حلقہ میرا ہے میں نے ادھر سے الیکشن لڑنا ہے لیکن چوہدری مجید نے میرا کوئی بھی کام نہیں ہونے دیا میں نہ کسی کی تقرری کر سکا ۔ نہ کسی کو اپنے شہر میں ٹرانسفر کر سکا ۔ ترقیاتی کام بھی بلدیہ کے پلیٹ فارم سے محدود وسائل میں جو کچھ ممکن تھاوہ کئے کیونکہ چوہدری مجید کر خطرہ تھا کہ اگر اس کو فنڈز دیئے تو یہ آئندہ الیکشن میں مزید بھاری اکثریت سے ووٹ لے گا چوہدری مجید نے میرپور کی تعمیر و ترقی کے حوالہ سے کسی بھی میٹنگ میں مجھے شامل کرنے کی کوشش نہیں کی یہ صرف اپنی ذات تک محدود ہے اس کو اپنے حلقہ کے علاوہ کسی حلقے اور میرپور کی فکر نہیں ہے ۔ یہ بہت بڑا ڈرامہ باز ہے اس نے ہمشہ سازش کی ہے ۔ پارٹی قیادت شریک چیئرمین آصف علی زرداری چیئرمین بلاول بھٹو محترمہ فریال تالپور کا میں تہہ دل سے مشکور ہوں کہ انہوں نے مجھے پارٹی ٹکٹ دیا ۔ چوہدری مجید کی بھرپور کوشش تھی کہ پارٹی مجھے ٹکٹ نہ دے جب ٹکٹ مجھے ملا تو چوہدری مجید نے پیپلز پارٹی کے کارکنوں کو بلا بلا کر مسلم لیگ ن کی حمایت کرنے کا کہا ۔ جس کا میں نے پارٹی قیادت کو ثبوت بھی فراہم کیے ۔میں نے بہت کوشش کی کہ صدر جماعت کو راضی کروں لیکن ان کی نیت ہی خراب ہے وہ کسی کے ساتھ بھی مخلص نہیں ہو سکتا ۔ میری تمام کوشش رائیگاں گئی ۔ میں نے پارٹی قیادت کو متعدد بار بتایا کہ اگر چوہدری مجید میرپور حلقہ سے خود الیکشن لڑنا چاہتا ہے تو ٹکٹ اس کو دے دیں ۔ مجھے کوئی اعتراض نہیں ہے ۔ میں نے محترمہ فریا ل تالپور اور چیئرمین بلاول بھٹو سے ملاقات کر کے بھی آگاہ کیا کہ چوہدری مجید میرے خلاف سازشیں کر رہا ہے اگر یہ ٹھیک نہ ہوا تو الیکشن میں پارٹی کا گراف نیچے آئے گا ۔گزشتہ روز بھی چوہدری مجید نے ایف ٹو اپنے گھر ایک میٹنگ رکھی تھی میں سمجھا کہ میرپور جلسہ کے حوالہ سے میٹنگ ہے لیکن وہاں صرف انہوں نے اپنے حلقہ چکسواری کے حوالہ سے بات شروع کر دی میرپور کی کوئی بات نہیں کی اور اس موقع پر وہاں پارٹی کے ایسے کارکن بھی موجود تھے جن کو میں نے کئی ماہ سے نہیں دیکھا تھا وہاں بھی چوہدری مجید کے کہنے پر وہاں موجود کارکنوں نے میرے خلاف باتیں شروع کر دی جو کوئی بھی شریف انسان برداشت نہیں کر سکتا ۔چوہدری مجید آج بھی مسلم لیگ ن کے امیدوار کی بھرپور حمایت کر رہا ہے اور اپنے لوگوں کو بلا بلا کر کہتا ہے کہ میرپور سے مسلم لیگ ن کو سپورٹ کریں یہ میرے حلقہ چکسواری میں میری سپورٹ کرینگے ۔ ہذا میں نے بہت سوچ سمجھ کر یہ فیصلہ کیا ہے کہ پارٹی کسی قیمت پر نہیں چھوڑوں گا پارٹی نے مجھے عزت دی ہے جب تک زندگی ہے وفا نبھاوں گا۔ چونکہ چوہدری مجید میرے خلاف سازشیں کر رہا ہے ان حالات میں میرا الیکشن لڑنا مشکل ہو گیا ہے میں چوہدری مجید کی غلط پالیسیوں کے وجہ سے اس الیکشن کا بائیکات کرتا ہوں ۔ چوہدری مجید اس بات کا ذمہ دار ہے ۔میں پیپلز پارٹی کے تمام کارکنوں PSF PYO یوتھ لیبر ونگ کا تہہ دل سے مشکور ہوں جنہوں نے گزشتہ ایک ہفتہ سے الیکشن مہم میں بھرپور حصہ لیا ۔ انشاء اللہ میرپور کی تعمیر و ترقی کے لیے مل جل کر کام کرنیگے ۔ پیپلز پارٹی ہماری جماعت ہے ۔ قائد عوام شہید ذوالفقار علی بھٹو محترمہ شہید بی بی رانی کے مشن کی تکمیل کیلئے ہم سب چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے ہراول دستے کا کردار ادا کرینگے لیکن چوہدری مجید کے ساتھ چلنا مشکل ہے ۔میں آخر میں اپنے حلقہ کے تمام ساتھیوں ووٹروں سپورٹروں بھائیوں دوستوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے ہمشہ میری حوصلہ افزائی کی ہے اور مجھے کبھی تنہا نہیں چھوڑا میں بھی آپ لوگوں سے وعدہ کرتا ہوں کہ میرا ہر فیصلہ اس حلقہ کے لوگوں کی بہتری کے لیے ہوگا میں میرپور کا رہنے والا ہوں اور آپ کے پاس ہی رہوں گا ۔

 

Scroll To Top