نذیر انقلابی کو ٹکٹ چودھری عبدالمجید کے کہنے پر دیا گیا،فاروق حیدر نے مجید کے کہنے پر چکسواری کا دورہ کیا:ظفر انور کا انکشاف

Zafr Anwar

چکسواری (سپیشل رپورٹر )پاکستان تحریک انصاف کے سونامی نے پیپلزپاپرٹی کا صفایا کر دیا۔سونامی کے سامنے پیپلز اپرٹی تنکوں کی طرح بہہ رہی ہے۔ہر روز ظفر انور پیپلز پارٹی کی وکٹیں گرارہے ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف کے چیف آرگنائزر اور حلقہ ایل اے ٹو اسلام گڑھ چکسواری سے نامزد امیدوار برائے قانون ساز اسمبلی چوھدری ظفر انور نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی ایک دوسرے سے ملے ہوئے ہیں۔ نذیر انقلابی کو ٹکٹ چودھری عبدالمجید کے کہنے پر دیا گیا۔ جب پی ٹی آئی کی مقبولیت کا گراف بڑھنے لگا تو چودھری مجید کے کہنے پر راجہ فاروق حیدر چکسواری آئے ورنہ انھوں نے چکسواری کا دورہ نہیں کرنا تھا۔غیرت مند اور با شعور عوام پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کے گٹھ جوڑ کو ناکام بنا دیں گے۔ ماضی کی بد ترین مخالف جماعتیں صرف اور صرف اپنی کرپشن کو چھپانے کیلئے ایک پلیٹ فارم پر جمع ہوئی ہیں۔ان خیالات کا اظہار چودھری ظفر انور نے چک پیڈا کے مقام پر ایک کارنر میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انھوں نے مزید کہا کہ دونوں سیاسی جماعتیں اور آزاد امیدوار ملے ہوئے ہیں ،سب کی یہی خواہش اور کوشش ہے کہ چودھری ظفر انور کو ہرایا جائے۔اس لئے کہ پاکساتن تحریک انصاف احتساب کی بات کرتی ہے۔کرپشن کے ذریعے جمع کئے گئے مال کا حساب مانگتی ہے۔ کرپٹ عناصر کو جیل میں ڈالنے کی بات کرتی ہے۔احتساب ہمارے منشور کا حصہ ہے۔ ہم نہ صرف دوسروں کا احتساب کریں گے بلکہ ہر امیدوار خود کو بھی احتساب کیلئے عوام کے سامنے پیش کرے گا۔پانچ سالہ کارکردگی کے بعد ہم دوبارہ آپ کی عدالت میں آئیں گے اور آپ ہمارا احتساب کرنا۔انھوں نے مزید کہا کہ میں اپنی ذات کے حوالے سے ہر چیز پر سمجھوتہ کر سکتا ہوں لیکن ریاستی تشخص کی بات ہو تو کبھی سمجھوتہ نہیں کروں گا۔ چودھری مجید نے ریاستی تشخص اور وزیرا عظم کے منصب کی توہین کی ہے۔زرداری ہاؤس کا ملازم ریاست کے منتخب وزیر اعظم کو اؤے مجید کہہ کر مخاطب کرتا رہا ہے۔ یہ ریاستی تشخص اور ہم سب کی توہین ہے۔ہم اپنی عزت نفس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے۔چودھری ظفر انور نے مزید کہا کہ میں اس بات سے ڈرتا ہوں کہ اللہ تعالیٰ مجھے توفیق دے کہ میں آپ کی دی ہوئی محبت کو سنبھال سکوں۔جو عزت آپ نے مجھے بخشی ہے اسے قائم رکھ سکوں اور آپ کی اجتماعی امنگوں پر پورا اتر سکوں۔عاشق حسین عاشق جنرل سیکرٹری تحریک انصاف یارک شائر نے کہا کہ اس حلقہ کا وزیر اعظم ایک پٹواری رہا ہے۔اٹھارہ لاکھ سے زائد کشمیری بیرون ملک کام کر رہے ہین انکی زکواۃ کو ہی اگر جمع کیا جائے تو آزاد کشمری کا کونہ کونہ پکا ہو سکتا ہے۔ گلیوں میں ٹائل لگائیں تب بھی پیسہ بچ جاتا ہے۔آج آپ کو سیاسی رشوت کے طور پر ڈھائی ڈھائی لاکھ کے چیک دیئے جا رہے ہیں۔ آج گلیاں پکی کرنے کا وعدہ کیا جا رہا ہے۔ یہ گلیاں اور واٹر سپلائیاں پچھلے پانچ سالوں میں کیوں نہیں لگوائی گئیں؟؟میرے بھائیو اٹھ کھڑے ہو۔ آنے والی نسلوں کے مستقبل کی خاطر حلقہ بھر کے قابل ترین اور موزوں ترین امیدوار کو ووٹ دیں۔میں چیلنج کرتا ہوں کہ اگر کوئی ظفر انور سے زیادہ قابل شخص ہے تو اسے سامنے لے آئیں۔ان کے علاوہ چودھری لیاقت علی ،چودھری آفتاب حمید ،چودھری شبیر حسین نگیال،چودھری مدثر ،چودھری ساجد محمود ،راجہ ذاکر ،چوھری خادم حسین اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔مقررین نے پانچ سالہ وزارت عظمیٰ کے دوران عوام پر ڈھائے جانے والے مظالم اور علاقہ میں تعمیر و ترقی کے حوالے سے گلے شکوے کئے اور وزیر اعظم چودھری مجید کو ووٹ نہ دینے کا اعلان کیا۔ اس سے قبل مغل برادری ،انصاری برادری اور دیگر نے متفقہ طور پر غیر مشروط طور پر پی ٹی آئی کو ووٹ دینے کا اعلان کیا۔

 

Scroll To Top