آزادکشمیر میں 30 ہزار فوجی جوان تعینات ، امیدواران اپنے ووٹرز سپورٹرز کوبھی ضابطہ اخلاق کا پابند بنائیں:چوہدری منیر،برگیڈیئر فیصل

army

میرپور(کے این آئی)ڈسٹرکٹ ریٹرنگ آفیسر ضلع میرپورچوہدری محمدمنیراور پاک آرمی کے برگیڈیئر محمدفیصل نے کہاہے کہ آزادکشمیرمیں 21 جولائی کوآزادانہ ، منصفانہ اور شفاف انتخابات کا انعقاد فوج کی نگرانی میں ہورہے ہیں۔ سارے آزادکشمیر میں 30 ہزار فوج کے جوان تعینات کردیئے گئے ۔ امیدواران خود بھی اور اپنے ووٹرز سپورٹرز کوبھی ضابطہ اخلاق کا پابند بنائیں۔ الیکشن کاعملہ ، فوج ، پولیس اور انتظامیہ مکمل طورپرغیرجانبدار ہوکرالیکشن کروائے گی اور ووٹرز کو آزادانہ ماحول میں اپنا حق رائے دہی استعمال کرنے کا موقع فراہم کرے گی۔ کسی بھی امیدوار کو ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے حوالے سے یادیگر کوئی شکایت ہوتووہ الیکشن کمیشن، ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفیسر، ریٹرننگ آفیسر، انتظامیہ، پولیس اور متعلقہ حلقہ کے فوج کے انچارج سے بھی رابطہ کرسکتاہے۔ انتخابات سے قبل 24 گھنٹے الیکشن مہم مکمل ختم ہوجائے گی جس کے بعد کوئی جلوس ریلی نہیں نکالی جائے گی۔ پریزائیڈنگ آفیسر پرذمہ داری ہے کہ وہ جعلی ووٹ کاسٹ نہ ہونے دے۔ لاء اینڈ آرڈر کوجس شخص نے بھی ڈسٹرب کرنے کی کوشش کی اس کے ساتھ سختی سے نمٹا جائے گا ۔ امیدوار اپنے اپنے ووٹرز کو آگاہ کریں کہ وہ پولنگ والے دن اپنا اصل قومی کمپیوٹرائزڈ شناختی کارڈہمراہ لائیں۔ اصل کمپیوٹرائزڈشناختی کارڈ کے بغیر ووٹ پول نہیں ہوسکے گااورنہ ہی کوئی ووٹر پولنگ بوتھ سے بیلٹ پیپر باہرلے جاسکے گا۔ فوج کے جوان پولنگ اسٹیشن کے اندر اور باہر تعینات ہونگے اور امن وامان کے قیام کے لیے ہرممکن اقدامات اٹھائیں گے۔ ان خیالات کااظہار انھوں نے ضلع میرپور کے چاروں حلقہ جات کے امیدواران اور ان کے نمائندگان کے ساتھ اعلیٰ سطعی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ڈپٹی کمشنرچوہدری امجداقبال، ریٹرنگ آفیسران، پاک آرمی، پولیس افسران اور امیدواران اسمبلی و ان کے نمائندگان موجود تھے۔ اس موقع پرامیدواروں اور ان کے نمائندگان نے بھی مختلف تجاویز دیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفیسرضلع میرپورو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج چوہدری محمدمنیر نے کہاکہ ضلع میرپور میں انتخابات کو پرامن صاف شفاف بنانے کے لیے امیدواروں اور ان کے ووٹرسپورٹرز انتخابی ضابطہ اخلاق کی مکمل پابندی کویقینی بنائیں۔ انتخابی ضابطہ اخلاق کی پابندی کے بغیر پرامن انتخابات کا انعقاد ممکن نہیں ہے۔ انھوں نے کہاکہ ووٹرز کوہرممکن تحفظ فراہم کریں گے۔ جملہ امیدواران سے ہونے والی میٹنگز میں اب تک ضابطہ اخلاق کی عملداری میں بہتری ضرور آئی ہے لیکن مکمل عملدرآمد نہیں ہورہا جس سے ایک دوسرے امیدواران کو شکایات پیداہوئی ہیں اور پھرکشیدگی کا ماحول پیداہونے کے امکانات پائے جاتے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ الیکشن کمیشن کی ہدایات کے مطابق تمام جماعتوں کے جھنڈے بلاتخصیص اتروائے گئے ہیں ۔ انھوں نے کہاکہ پولنگ والے دن سکیورٹی کے فول پروف انتظامات ہونگے۔ ووٹرز کو ڈرنے کی کوئی ضرورت نہیں۔ انھوں نے بتایاکہ پولنگ اسٹیشن سے 250 گز کے فاصلہ پرامیدواران پولنگ کیمپ قائم کرسکتے ہیں۔ ایک امیدوار دو پولنگ ایجنٹ رکھ سکتاہے۔ پولنگ ایجنٹ کے لیے ضروری ہے کہ وہ متعلقہ پولنگ اسٹیشن کا ہی ووٹر ہو۔ پریزائیڈنگ آفیسرکے علاوہ کوئی پولنگ ایجنٹ یاپولنگ کاعملہ موبائل فون استعمال نہیں کرسکے گا۔پاک آرمی کے برگیڈیئرمحمدفیصل نے کہاکہ پاک آرمی کوآزادکشمیرکے انتخابات کوصاف شفاف اور پرامن کروانے کے لیے جومینڈیٹ ملاہے ہم اس پربلاتخصیص پوری طرح عمل کریں گے۔ پرامن انتخابات کے لیے ضلع میرپورمیں 2700 فوج کے جوان تعینات کردیئے گئے ہیں۔ ضلع میرپورکے چاروں حلقہ جات میں تعینات فوج کی کمان میں خود کررہاہوں جبکہ ہرحلقہ انتخاب میں ایک لیفٹیننٹ کرنل کمان کررہے ہیں۔ اس کے علاوہ ہرحلقہ میں مختلف سیکٹر قائم کردیئے گئے ہیں جن میں میجراور کیپٹن لیول کے آفیسران قیادت کررہے ہیں۔ا سکے علاوہ پاک آرمی کے مختلف موبائل دستے بھی پٹرولنگ کریں گے اور ضلع بھرمیں سکیورٹی کے علاوہ سماج دشمن عناصر اور ممکنہ دہشت گردی کی کنٹرول کے لیے بھی اہم اقدامات ا ٹھائے گئے ہیں۔ کوئی بھی شرپسند عناصر زراسی غلطی کرے گاتو اس کے ساتھ سختی سے نمٹاجائے گا۔ لاء اینڈ آرڈر کی صورتحال خراب کرنے والوں کے خلاف آئینی ہاتھوں سے نمٹاجائے گا۔ موجودہ الیکشن صاف شفاف اور سخت ہونگے جن پرکوئی انگلی نہیں اٹھاسکے گا۔ اس سلسلہ میں کسی بھی پارٹی یاامیدوار سے کوئی رورعایت نہیں برتی جائے گی۔ ہمارے لیے تمام امیدواران برابر ہیں۔ ووٹرکا تحفظ کویقینی بنایاجائے گا۔ پولنگ اسٹیشن کے اندر پاک آرمی بھی تعینات ہوگی۔

 

Scroll To Top