آزادکشمیر کو الیکشن سے قبل خانہ جنگی کی حالت میں لیجانے کی پیپلز پارٹی کی سازش کامیاب نہیں ہوگی:فاروق حیدر

Farooq Hedar

مظفرآباد(بیورو رپورٹ)مسلم لیگ ن آزادکشمیر کے سربراہ و سابق وزیراعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ حکومت آزادکشمیر مجرمانہ غفلت کی مرتکب ہو رہی ہے آزادکشمیر کو الیکشن سے قبل خانہ جنگی کی حالت میں لیجانے کی پیپلز پارٹی کی سازش ناکام بنائیں گے چوہدری عزیز پر حملہ کر کہ انتخابی عمل کو سبو ثاژ کرنے کی کوشش کی گئی کارکن پرامن رہیں شکست کے خوف نے چوہدری مجید اور ان کی ٹیم کو بوکھلاہٹ کا شکار کر دیا ہے چیف الیکشن کمشنر اپنی ذمہ داریاں پوری کریں ،آزادکشمیر کے ہر ضلع میں حکومت نے انتظامیہ اور پولیس اپنی مرضی کی لگائی ہوئی ہے ،مقبوضہ کشمیر میں برہان وانی کی شہادت نے جدوجہد آزادی کو نئی جہت بخشی ،درجنوں معصوم کشمیریوں کی شہادت پر حکومت پاکستان اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس بلانے کے لیے تحریک کرے سرینگر کی موجودہ صورتحال اس بات کی متقاضی ہے کہ بیس کیمپ بھی اپنا کردار ادا کرے،لاکھوں کشمیریوں کی جانب سے پرامن اور جمہوری طریقے سے حق خودارادیت کے مطالبے کے بعد بین الاقوامی برادری کے پاس کوئی اخلاقی جواز نہیں بچتا کہ وہ انسانیت کی بنیاد پر کشمیریوں کی حمایت نہ کرے ،پڑھے لکھے نوجوانوں کی تحریک حریت میں شمولیت اس بات کی عکاسی کرتی ہے کہ جدوجہد آزادی کی باگ دوڑ اب نئی نسل کو منتقل ہو چکی ہے جو کہ اپنا کام بطریق احسن سرانجام دے رہی ہے مختلف مقامات پر کارنرمیٹنگز سے خطاب اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوے راجہ فاروق حیدر خان نے کہا کہ اگر اللہ نے موقع دیا تو تحریک آزادی کو دنیا بھر میں بین الاقوامی سطح پر اجاگر کرنے کے لیے جدید ذرائع کو بروے کار لائیں گے موجودہ حکومت کے دور میں سرینگر میں لاکھوں کشمیری احتجاج پر رہے اب بھی ہیں مگر انہوں نے تحریک آزادی کشمیر کے نام پر قائم کیے گئے اداروں کو سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کیا وقت اور حالات کا تقاضہ ہے کہ سرینگر کے عوام جو کہ اس جدوجہد آزادی میں فرنٹ لائن پر ہیں کو بیس کیمپ سے سیاسی و اخلاقی مدد فراہم کی جائے راجہ فاروق حیدر خان نے کہا کہ آزادکشمیر کے اندر جان بوجھ کر حالات خراب کیے جارہے ہیں چیف الیکشن کمشنر اپنی ذمہ داریاں پوری کریں اس سے پہلے کہ حالات مزید خراب ہوں انہیں انتظار کے بجاے اب عملی اقدامات کرنے ہونگے حکومت نے ہر ضلع اور سب ڈویژن میں اپنی مرضی کی انتظامیہ تعینات کی ہوئی ہے تو پھر امن وامان کی ذمہ داری بھی انہی کی بنتی تھی چوہدری محمد عزیز پر قاتلانہ حملہ کیا گیا ،باغ میں لیگی کارکنوں پر فائرنگ کی گئی ،ہٹیاں ،نکیال میں بھی لیگی کارکنوں کے خلاف اشتعال انگیز کاروائیاں کی گئیں اگربروقت نوٹس لے لیا جاتا تو پھر حالات بہتر ہو سکتے تھے مگر یہاں حکومت جان بوجھ کر یہ چاہتی ہے کہ حالات خراب ہوں کیونکہ انہیں شکست کی صورت میں اپنی سیاسی موت نظر آرہی ہے پانچ سال تک جو یہ کرتوت کرتے رہے ہیں عوام نے طے کر لیا ہے کہ وہ اس کا جواب اب انتخابات میں ووٹ کی پرچی کے ذریعے دینگے آزادکشمیر بھر میں لیگ کو جو پذیرائی مل رہی ہے اس سے پیپلز پارٹی ،اور مفاداتی اتحاد کی چولیں ہل گئی ہیں کارکنان اکیس جولائی تک بہرصورت پرامن رہیں اور زیادہ سے زیادہ ووٹ ڈالنے کے عمل کو یقینی بناتے ہوے لیگ کو کامیاب کریں انہوں نے کہا کہ فوری طور پر حساس حلقوں میں فوج اور پیراملٹری فورسز کو امن و امان کے حوالے سے تعینات کیا جاے تاکہ کوئی خون خرابہ نہ ہو سکے ۔

 

Scroll To Top