1947 کی تقسیم کے دوران میں آزاد کشمیر سے 31,619 کنبے ہجرت کر کے آئے تھے

muhaajir

سری نگر(یوا ین پی)مقبوضہ کشمیر حکومت نے انکشاف کیا ہے کہ 1947 کی تقسیم کے دوران میں پاکستانی زیر انتظام کشمیر سے 31,619 کنبے ہجرت کر کے یہاں آگئے جن میں سے 26319کنبے ریاست جموں و کشمیر جبکہ باقی ماندہ 5300ملک کی دیگر ریاستوں میں رہائش اختیار کئے ہوئے ہیں۔ میڈیا کے مطابق قانون اسمبلی میں بدھ کو ایم ایل اے راجو جسروٹیا کی طرف سے پوچھے گئے سوال کے تحریر ی جواب میں حکومت نے یہ بات واضح کی کہ پاکستانی زیر انتظام کشمیر سے 31,619کنبے نقل مکانی کر کے سرحد کے اِس پار آئے جن میں ملک کی دیگر ریاستوں میں5300مقیم ہیں۔ تحریری جواب میں کہا گیا ہے کہ ریاست میں مقیم 26319مہاجرین کنبوں جو اس وقت دہی اور شہری علاقوں میں رہائش پزیز ہوئے۔حکومت کے مطابق ریاست کے دہی علاقوں میں اس وقت رہائش پزیر مہاجرین کو آڈر نمبر 568.COf1954کے تحت 1000روپے مہانہ کا معاوضہ فراہم کیا جا رہا تھا ،اور بعد میںآڈر نمبر 568.C1954 کے تحت 4ایکڑ آبی یا 6ایکڑ خشکی اراضی کے حسا ب سے 705150کنال اراضی فراہم کی گئی۔ ان مہاجرین میں چھمب کے وہ کنبے بھی شامل ہیں جو 1965اور1971کی جنگوں کے دوران پاکستان سے یہاں آئے تھے۔ اسی طرح سیکشن 3Aزمینی ایکٹ 1976کے تحت ان مہاجرین کو زمین کا مالکانہ حق بھی دیا گیا اور اب یہ زمین کوفروخت بھی کر سکتے ہیں اور طوفے میں بھی دے سکتے ہیں ۔تحریری جوا ب میں حکومت نے مزید بتایا ہے کہ جو مہاجرکنبے شہری علاقوں میں رہائش پزیر ہوئے ان میں سے 1628 کنبوں کو رہائشی کواٹر فراہم کئے گئے، جبکہ 793کنبوں کیلئے بخشی نگر ، نوشہری ،ادھموپور ، راجوری ،پتولی جموں اور سرینگر کے نٹی پورہ علاقے میں زمین کے پلاٹ فراہم کئے گئے ۔ البتہ 1947کے مہاجرین کے کچھ مطالبات جو زیر التوہ رہ گئے تھے۔ اور ان کی شکایت تھی کہ انہیں کم زمین فراہم کی گئی ہے اور ان 1867 کنبوں کو 5000روپے کے حساب سے فی کنال اور زیادہ سے زیادہ ایک کنبہ کو30ہزار روپے دئے گئے اور اس طرح مجموعی طور ابتدائی پیکیج کے تحت مستحقین کے حق میں 4 کروڑ 23لاکھ روپے فراہم کئے گے ۔ اس کے علاوہ بھارتی حکومت نے مزید 49کروڑ روپے کے جامع امداد کی منظوری دی ۔جس کے تحت 2575کنبوں میں 31،43کروڑ روپے ادا کئے گئے ہیں۔
Scroll To Top