خان پیندا سے 165000روپے رشوت لینے کا الزام، کاکڑہ میں تعینات پٹواری شبیر چوہدری معطل

Man secretly hands graft to other hand

کاکڑہ ٹاؤن(نمائندہ خصوصی)محکمہ مال کی جانب سے کاکڑہ وپوٹھہ میں تعینات پٹواری شبیر احمد چوہدری رشوت خوری کے الزام میں معطل ۔کمشنر میرپور ڈویژن راجہ امجد پرویز نے پٹواری شبیر احمد چوہدری کو کاکڑہ ٹاؤن کے رہائشی خان پیندا سے رشوت لینے کے الزام میں معطل کر کے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر میرپور کو آزاد جموں وکشمیر سول سرونٹس (ایفیشنسی اینڈ ڈسپلن )رولز1977کے تحت انکوائری آفیسر مقرر کر کے دونوں فریقوں کے سماعت کے بعد رپورٹ انکوائری مکمل کرتے ہوئے مجاذ اتھارٹی ڈپٹی کمشنر /کلکٹر ضلع میرپور کو اندر معیاد پیش کرنے کا حکم دے دیا تاکہ باضابطہ طور پر سز ا وجزا کا تعین ہو سکے۔کاکڑہ ٹاؤن کے رہائشی خان پیندا نے کاکڑہ ٹاؤن کے مقام پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے محکمہ مال کے ریکارڈ میں درستگی کے نام پٹواری شبیر احمد چوہدری نے ان سے 165000روپے رشوت لی اور رشوت لینے کے باوجود کام نہ کیا ۔جب کمشنر میرپور ڈویژن راجہ امجد پرویز کو پٹواری شبیر احمد چوہدری کے خلاف رشوت خوری کی درخواست دی تو پٹواری شبیر احمد چوہدری نے ارشد محمود ولد محمد قربان اور خالد فاروق وغیرہ کے ذریعے میرے ساتھ رابطہ کیا کہ آپ میرے خلاف کاروائی نہ کریں میں آپ کو آپ کی رقم واپس کر دیتا ہوں لیکن رقم واپس نہ کی۔انہوں نے کہا کہ کمشنر میرپور ڈویژن راجہ امجد پرویز خراج تحسین کے لائق ہیں کہ جنہوں نے انصاف کے تقاضے پورے کرتے ہوئے راشی پٹواری چوہدری محمد شبیر کو معطل کر کے انکوائری عمل میں لائی اور میرے پیسے مجھے واپس دلوائے اور نائب تحصیلدار چوہدری مہربان کے ذریعے رشوت کی رقم میرے حوالے ہوئی ۔انہوں نے کہا کہ پٹواری شبیر احمد چوہدری کا بلڈ ٹیسٹ کرایا جائے تو اس کی شراب نوشی کا بھی پول کھل جائیگا۔کمشنر میرپور ڈویژن راجہ امجد پرویز کاروائی کرتے ہوئے محکمہ مال میں کالی بھیڑوں کا خاتمہ کریں تاکہ معاشرے اندر عوام سکھ کا سانس لے سکیں۔
Scroll To Top