اگر مجید اپنی پانچ سالہ کالک دھونا چاہتا ہے تو وہ اسمبلی توڑ دے :فاروق حیدر

Farooq haidar

مظفرآباد(سٹاف رپورٹر)مسلم لیگ ن آزادکشمیر کے سربراہ و اپوزیشن لیڈر راجہ فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ غیرت مند ممبران اسمبلی کشمیر کونسل کے انتخابات سے قبل استعفیٰ دیدیں ۔میں سب سے پہلے استعفیٰ دوں گا۔معاملہ امجد جلیل کی اہلیت کا نہیں ۔عدالت کے فیصلہ کے بعد کیا خرید و فروخت ہوگی اس کا ذمہ دارکون ہوگا؟اگر مجید اپنی پانچ سالہ کالک دھونا چاہتا ہے تو وہ اسمبلی توڑ دے ۔موجودہ حکومت کو بیس کیمپ کی حکومت کہنا بیس کیمپ کی توہین ہے ۔ضمیر فروشی جسم فروشی سے بدتر فعل ہے ۔میں آج بھی کہتا ہوں جو ضمیر فروشی کرتے ہیں وہ سیاسی طوائفے ہیں ۔اگر یہ الیکشن ہو گئے تو انشاء اللہ مسلم لیگ ن کے دامن پر کوئی داغ نہیں ہوگا۔ہمارا نامزد امیدوار کامیاب ہوگااور کوئی ممبراسمبلی سیکنڈ چوائس استعمال نہیں کرے گا۔مسلم لیگ ن کے پارٹی ٹکٹس کا اعلان جون کے پہلے ہفتے میں ہو جائے گا۔میاں محمد نواز شریف رمضان سے قبل مظفرآباد میں بڑے جلسہ عام سے خطاب کرینگے ۔عام انتخابات میں مسلم لیگ ن واحد سیاسی جماعت کے طور پر کامیابی حاصل کر کے حکومت بنائے گی ۔اگر ایسا نہ ہوا تو مانگے تانگے کے بجائے اپوزیشن میں بیٹھنا پسند کرینگے ۔ملازمین اور لیڈی ہیلتھ ورکرز کی ہڑتال کی مکمل حمایت کرتا ہوں ۔اگر کسی دوسرے کو مراعات مل رہی ہیں تو سب کے ساتھ یکساں سلوک ہونا چاہئیے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکزی ایوان صحافت میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ عمران خان نے گزشتہ روز ایک کھلنڈرے لڑکے کی طرح خطاب کیا۔اور یہاں سے چلے گئے وہ خواتین کے حقوق کی بہت بات کرتے ہیں مگر انہوں نے اپنے جلسہ میں کسی خاتون کو خطاب کا موقع تک نہ دیا ۔کل کے جلسہ نے پی ٹی آئی مظفرآباد کی سیٹ کا پول کھول کر رکھ دیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کونسل کے الیکشن باضمیر اراکین اسمبلی کی غیرت کا معاملہ ہیں اور میں یہ کہتا ہوں کہ وہ مستعفی ہو جائیں اور میں سب سے پہلے استعفیٰ دوں گا۔اس وقت حکومت بالکل بے مقصد ہے اور ان کا مقصد صرف اور صرف کونسل کی نشستیں حاصل کرنا اور ان سے کمیشن کمانا ہے ۔میں ضمیر فروشی کو جسم فروشی سے بدتر فعل سمجھتا ہوں اور اس وقت مجید ،عتیق ،بیرسٹر سلطان کو چاہئیے کہ وہ انڈر ہینڈ کے بجائے سیاسی اتحاد بنا کر کشمیر کونسل کا الیکشن لڑیں ۔بلاول اور عمران خان جہاں کرپشن کو روکنے کی بات کرتے ہیں کیا ان کو اپنی ناک کے نیچے کونسل کے الیکشن میں کرپشن ہوتی نظر نہیں آرہی ۔ایک پارٹی کے پاس 4اور ایک کے پاس 1ووٹ ہے ۔وہ بھی اپنے ممبر منتخب کروانے جا رہے ہیں ۔کیا یہ کرپشن نہیں ۔ان کو کہاں سے ووٹ ملے گا؟اور اس خرید و فروخت کا ذمہ دارکون ہوگا؟انہوں نے کہا کہ ہمیں ایسی مثال قائم کرنی چاہئیے کہ آئندہ خطہ میں کوئی کرپشن نہ کرے اور صاف و شفاف انتخابات کا انعقاد ممکن ہو سکے ۔مسلم لیگ ن تمام تر حالات کے باوجود اپنے امیدوار کی کامیابی کو ممکن بنائے گی اور ہمارے ممبران صرف اپنے امیدوار کو ووٹ دینگے ۔انہوں نے کہا کہ ارشد غازی ،مرزا ظفر،احسن منظور کو یقین دلاتا ہوں کہ ان کی قربانی ہر گز رائیگاں نہیں جائے گی اور نہ ہی ہم ان کو فراموش کرینگے ۔غازی الہی بخش ،چوہدری ولی جو اور مرزا ظفر کے خاندان کی قربانیوں کو کوئی بھی فراموش نہیں کر سکتا۔انہوں نے کہا کہ اقتدار پرست مسلم کانفرنس اور پی ٹی آئی اقتدار حاصل کرنے کیلئے کچھ بھی کر سکتے ہیں ۔عمران خان یہاں آئے انہوں نے کشمیری قوم کو کیا پیغام دیا ۔صرف ایک کھلنڈر لڑکے کی طرح باتیں کیں۔اپنے اردگرد چھ چھ مرتبہ جماعتیں تبدیل کرنے والے کھڑے کیے ۔فاروق حیدر نے کہا کہ میں ملازمین اور لیڈی ہیلتھ ورکرز کی ہڑتال کا مکمل حمایتی ہوں اور میں نے اس سلسلہ میں وزارت امور کشمیر کے نوٹس میں بھی یہ بات لائی ہے اور جنہوں نے مجھے ان معاملات کو فوری طورپر حل کرنے کی یقین دہانی کروائی ہے ۔آزاد کشمیر کے صدر،وزیر اعظم کونسل فنڈز کیلئے ہڑتالیں کرتے ہیں تو ان معاملات کے اوپر حکومت پاکستان سے کیوں بات نہیں کرتے؟اگر وہ ان کی بات کریں تو میں بھی ان کا ساتھ دوں گا۔انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ عوام کو ساتھ رکھنے کیلئے اقتدار کی باتیں کرتے ہیں ۔یہ صرف ایک بیان بازی ہے ۔ان کو اقتدار نہیں ملے گا۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کرنیوالوں کو ہر گز برداشت نہیں کرے گی ۔میرے سمیت جو بھی پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کرے اس کے خلاف کارروائی ہوگی ۔کوئی اپنے طور پر اپنے آپ کو امیدوار ڈکلےئر نہ کرے ۔انہوں نے کہا کہ واپڈا نے آزادکشمیر کے پیسے دینے ہیں ۔ہم نے ان کا کوئی پیسہ نہیں دینا۔جس طرح کے پی کے کو واٹر یوز چارجز اور دیگر حق دیا گیا اسی طرح ہمیں بھی یہ حق ملنا چاہئیے۔اگر یہ معاملہ اس طرح حل نہ ہوا تو پھر سپریم کورٹ پاکستان ہی اس کا فیصلہ کرے گی ۔
Scroll To Top