وزارت امور کشمیر فرعون بن چکی،پاکستان سے محبت کیلئے ہمیں سرٹیفکیٹ لینے کی ضرورت نہیں:چوہدری مجید

Ch Majeed

نیلم(کے این آئی) وزیراعظم آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر چوہدری عبدالمجیدنے کہا ہے کہ وزارت امور کشمیر فرعون بن چکی ہے آزادکشمیر کے لوگوں کو تھرڈ کلاس شہری سمجھتی ہے پاکستان ہماری منزل ہے ہماری ماں ہے ہمارے لیے مقدس سرزمین ہے ہمیں کسی سے سرٹیفکیٹ لینے کی ضرورت نہیں ہے اس وزارت نے ہمارے ڈویلپمنٹ کے اڑھائی ارب روپے روک رکھے ہیں ٹیکسز کا حصہ نہیں دیا جارہا کشمیر پراپرٹی کا پیسہ نہیں مل رہا اب یہ لینا صرف میرا کام نہیں ہے آپ کو بھی کردار ادا کرنا چاہیے ان خیالات کا اظہار انہوں نے اٹھمقام کے مقام پر نیلم بار ایسوسی ایشن کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا تقریب سے وزیر خزانہ چوہدری لطیف اکبر، وزیر تعلیم سکولز میاں عبدالوحید، صدر بارایسوسی ایشن محمد نواب مغل نے بھی خطاب کیا جبکہ وزیر زراعت بازل علی نقوی اور وزیراعظم کے میڈیا کنسلٹنٹ واحد اقبال بٹ بھی موجود تھے۔ وزیراعظم نے کہا کہ آزادکشمیر کا ترقیاتی بجٹ10ارب روپے اور گزشتہ 10سال سے ترقیاتی بجٹ میں اضافہ نہیں ہوا اس بجٹ سے کیا کرپشن ہوسکتی ہے نواز شریف وزیراعظم پاکستان کی حیثیت سے ہمارے لیے قابل احترام ہیں ہم ملک کے وزیراعظم کو عزت دیتے ہیں ہم پر کرپشن کے الزامات لگانے والے میری زبان نہ کھلوائیں سیکرٹری کاناکے ہاں سکیموں کے حوالے سے چالیس اور ساتھ فیصد کا ریشو چلتا ہے صوبے کے برابر درجہ دیا جاتا ہے لیکن فنڈز کی بندش سے ترقیاتی کام متاثر ہوتے ہیں سات ارب سے زائد ٹیکسز کے پیسے نہیں مل رہے ہم نے ہر امر کے خلاف لڑائی لڑی ہے لیکن حقوق پر سمجھوتہ نہیں کیا 1974 کے ایکٹ میں ترامیم کے حوالے سے انہوں نے کہاکہ آزادکشمیر کو بھٹو نے آئین دیا جسکی وجہ سے آج آپ اپنی پرچی سے حکومت منتخب کرسکتے ہیں اور مسترد کرسکتے ہیں بھٹو نے ان پہاڑوں کو بھی زبان دی ہے جو آج اپنے حقوق مانگ سکتے ہیں تشخص کی بات کرنے والے تشخص کے لیے ہمارے ساتھ کھڑے نہیں ہوتے 1974کے ایکٹ میں ترامیم تیار ہیں آئیں ہمارے ساتھ وفاق سے بات کریں ہم مشترکہ اجلاس بلانے کو تیار ہیں ہم نے تاریخ تبدیل کی ہے فنڈز جو حکومتی ارکان کو ملے وہی اپوزیشن کو بھی ملے جبکہ یہ عوام کے پیسے کے بارہ بارہ کروڑ اپنے ارکان میں تقسیم کررہے ہیں۔وکلاء میرا قبیلہ ہے ہم نے جوڈشری کے لیے جو اقدامات کیے ہیں 70سال میں کوئی نہیں کرسکا آئندہ بجٹ میں مزید مسائل حل کریں گے وکلاء کو میڈیکل کی سہولیات کے علاوہ گیسٹ ہاؤسز میں بھی دیگر آفیسران کے برابر مراعات حاصل ہوں گی۔ وزیراعظم نے کہاکہ نیلم کے لوگ سینہ تان کر دشمن کے سامنے کھڑے رہے ہیں ان کے تمام مطالبات پورے کریں گے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کو سی ایم ایچ بنانے کے لیے متعلقہ حکام سے ملاقات کروں گا۔ہم عوام کی عدالت میں جائیں گے اور اپنی کارکردگی کی بنیاد پر سرخرو ہوں گے۔ بعدازاں وزیراعظم نے ڈپٹی کمشنر نیلم عبدالحمید کیانی اور ایس ایس پی جمیل احمد کو ہدایت کی کہ یہاں پر سیاحوں کو ہر قسم کی سہولیات فراہم کی جائیں۔ وزیر خزانہ چوہدری لطیف اکبر نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ برجیس طاہر کی سیڑھیاں چڑھتے چڑھتے تنگ آچکے ہیں ہم نے ایک اور وائسرے بنا دیا ہے حقوق پر سودا نہیں کرسکتے۔آئین میں ترامیم کے لیے ہم نے کمیٹی بنائی قوانین میں تبدیلی کی ضرورت ہمیشہ رہتی ہے بنیادی اختیارات کے لیے ترامیم تیار کی تھیں دیگر جماعتوں کے پاس دوتہائی اکثریت رہی لیکن کسی نے کوشش نہیں کی فرنیچر کے لیے انہوں نے 50ہزار کا اعلان کیا وزیر تعلیم سکولز میاں عبدالوحید نے اپنے خطاب میں کہاکہ آزادکشمیر کی اس کابینہ میں وزیراعظم سمیت 80فیصد ارکان کا تعلق وکلاء برادری سے ہے آپ کے مطالبے کے مطابق آئین میں ترامیم تیار کرکے بھیج دی تھیں سیکرٹری کانا نے اسکی نوک پلک درست کرنی تھی ہم اجلاس بلانے کو تیار ہیں۔
Scroll To Top