یوم مزدور کے موقع پر 6ماہ کی تنخواہوں سے محروم سینکڑوں لیڈی ہیلتھ ورکرز سڑکوں پر نکل آئیں،حکومت مخالف نعرے بازی

leady health worker bhmbr

بھمبر( بیورورپورٹ)یوم مئی کے موقع پرلیڈی ہیلتھ ورکرز کا 6ماہ کی تنخواہوں کی عدم ادائیگی پرسخت احتجاج ،سینکڑوں ہیلتھ ورکرز سڑکوں پر نکل آئیں ،مطالبات منظورنہ ہونے کی صورت میں 16مئی کو شروع ہونے والی پولیو مہم کے بائیکاٹ کا اعلان کر دیا،مئی کے آخر میں ماں بچے کی صحت کے حوالے سے منایا جانے والا ہفتہ بھی متاثر ہونے کا خدشہ ،آج محنت کشوں کے عالمی دن کے موقعہ پر ڈی ایچ او آفس سے سینکڑوں لیڈی ہیلتھ ورکرز نے ایک احتجاجی ریلی نکالی ،جس سے مختلف بازاروں کا چکر لگایا اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کی ،لیڈی ہیلتھ ورکرز کی احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی صدر ہیلتھ ایمپلائز ایسوسی ایشن چوہدری محمد مصطفی،نمائندہ لیڈی ہیلتھ ورکرز رخسانہ نذیر،شازیہ بٹ،زاہدہ نعیم،نسیم اختر،ثمینہ نازاور سیما خالد نے کہا کہ حکمرانوں کی نااہلی کے باعث آج محنت کشوں کے عالمی دن پرسینکڑوں لیڈی ہیلتھ ورکرز اپنے حق کے سڑکوں پر ہیں ،حالانکہ ہونایہ چاہیے تھا کہ آج کے روز حکومت نہ صرف لیڈی ہیلتھ ورکرز کو 6ماہ کی تنخواہوں اور بقایاجات کی ادائیگی کا اعلان کرتی مگر لگتا یہ ہے کہ حکمران طبقے کو غریب اور مزدورکی مشکلات کا کوئی احساس نہیں اوروہ ملازمین کے مسائل کے حل میں کوئی دلچسپی نہیں رکھتے ،انہوں نے کہا کہ اسلام آباد ،گلگت بلتستان ،پنجاب سمیت تمام صوبوں کی لیڈی ہیلتھ ورکرز کے مسائل وہاں کی حکومتوں نے ترجیحی بنیادوں پر حل کیے مگر آزادکشمیر کی لیٖڈی ہیلتھ ورکرز کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیوں کیا جا رہا ہے ،اکثر لیڈی ہیلتھ ورکرز اپنے کنبے و خاندان کی واحد کفیل ہیں مگرانہیں تنخواہوں کی ادائیگی نہیں کی جا رہی ہے بلکہ جون 2012 سے حکومت نے لیڈی ہیلتھ ورکرز کو بقایا جات بھی ادا نہیں کیے ،گزشتہ 6ماہ سے تنخواہیں بند ہیں دو لیڈی ہیلتھ ورکرز اسی دورانیے میں انتقال کر گئیں ان کے خاندان شدید مالی مشکلات کا شکار ہیں ،انہوں نے اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اگر لیڈی ہیلتھ ورکرز کو6ماہ کی تنخواہوں کی ادائیگی فوری نہ کی گئی تو16مئی سے شروع ہونے والی 3روزہ پولیو مہم کا بائیکاٹ کر دیں گے ،جبکہ اس ماہ کے آخر میں ماں اور بچے کی صحت کے حوالے سے منایا جانے والا ہفتہ کا بھی بائیکاٹ کر سکتے ہیں ،انہوں نے وزیر اعظم آزادکشمیر چوہدری عبدالمجید ،چیف سیکرٹری آزادکشمیر اور چیف جسٹس ہائی کورٹ سے مطالبہ کیا کہ وہ اس کا نوٹس لیں اور انہیں تنخواہوں کی فوری ادائیگی کے لیے اقدامات کریں ۔
Scroll To Top