پاکستان میں آئندہ دو ہفتوں میں روسی کورونا ویکسین دستیاب ہوگی

پاکستان میں ایک سے دو ہفتے کے دوران روس کی تیار کردہ کورونا ویکسین اسپُٹنک Sputnik فائیودستیاب ہوگی جس سے دیگر ملکوں کے برعکس پاکستان نجی سطح پر ویکسین فروخت کرنے والا پہلا ملک ہوگا ۔

روس سے کورونا ویکسین درآمدکرنے والی مقامی لیبارٹری کے ڈائریکٹر نےسماجی رابطے کی ویب سائٹ پرویکسین ایک سے دو ہفتے میں پاکستان میں دستیاب ہونے کی تصدیق کی اور بتایاکہ اسپٹنک فائیو ویکسین 91.6 فیصد مؤثر ہے ۔

غیرملکی خبرایجنسی کو انٹرویو میں نجی لیب کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ   ان کا دیگر ویکسین درآمد کرنے کا منصوبہ ہے لیکن اسپٹنک فائیو کی دستیابی پہلے ہوگی۔

انہوں نے ویکسین کی درآمدی قیمت یا لاگت کے بارے میں کچھ بتانے سے گریز کیا تاہم واضح کیاکہ پاکستان میں اسپٹنک فائیوویکسین کی قیمت عالمی سطح کے مقابلے میں زیادہ ہوگی۔

 واضح رہے کہ عالمی سطح پر اسپٹنک کی 2 ڈوز کی قیمت 20ڈالر رکھی گئی ہے جو3 ہزار 200 پاکستانی روپے کے قریب بنتی ہے ۔

نجی لیب کے ڈائریکٹر کے مطابق  عالمی سطح پر ویکسین کی طلب بہت زیادہ ہے، اگلے 3 سے 4ماہ میں جب زیادہ ویکسین دستیاب ہوگی تو قیمتیں کم ہوجائیں گی، ویکیسن کی من مانی قیمت پر شہریوں نے تحفظات کا اظہار کیا ہے ۔

ادھر سابق معاون خصوصی برائے صحت ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ   قیمت محدود نہ رکھی گئی تو اس سے عدم مساوات کو مزید تقویت ملے گی۔

 خبر ایجنسی کے مطابق وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان کہتے ہیں کہ وہ نجی لیب سے براہ راست معاہدے سے لاعلم ہیں۔

Scroll To Top