پورے عزم کے ساتھ ودای نیلم کی پسماندگی کو خوشحالی میں تبدیل کر دیں گے:وزیر تعلیم آزاد کشمیر میاں عبدالوحید

waheed

آٹھ مقام (آئی این پی) وزیر تعلیم آزاد کشمیر میاں عبدالوحید نے دورہ نیلم کے دوران عوامی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی نے عوام کو ووٹ کا حق دیا ہے اظہار رائے کی آزادی جموریت قانون انصاف کی بنیاد پیپلز پارٹی نے رکھی ہے۔ وادی نیلم کے عوام کی بھر خدمت کی ہے اور پورے عزم کے سارتھ ودای نیلم کی پسماندگی کو خوشحالی میں تبدیل کر دیں گے۔ پاکستان میں کوئی بھی سیاسی جماعت پیپلز پارٹی کا مقابلہ نہیں کر سکتی ہے۔ پاکستان میں مسلم لیگ ن کی حکومت پیپلز پارٹی کی مرہون منت ہے۔ سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری جمہوریت آئین قانون اور پارلیمنٹ کے بچانے کے لئے اور جمہوری عمل کو کامیاب بنانے کے لئے مسلم لیگ ن کی حکومت کو ان کی آئینی مدت پوری کرنے موقع دیا جا رہا ہے لیکن آزاد کشمیر کی نام نہاد مسلم لیگ ن جوکہ کہ ایک منحرف ٹولہ ہے سب وزارت عظمیٰ کے امیدوار ہیں۔ پاکستان میں میاں نواز شریف کی حکومت ختم کرنے کے درپے ہیں۔ آزاد کشمیر میں مسلم لیگ ن کے پاس13 حلقوں کے علاوہ امیدوار ہی دستیاب نہیں ہو سکے ہیں 41 حلقوں میں پیپلز پارٹی کی مضبوط پوزیشن ہے ناراض رہنماؤں کے پیپلز پارٹی کی قیادت نے تحفظات دور کر دئیے ہیں۔ میثاق جمہوریت پر عمل کے بغیرسیاسی جماعتوں کے پاس کوئی دوسرا آپشن نہیں ہے۔ پی ٹی آئی سیاسی جماعت نہیں ہے بلکہ آمریت کی باقیات کا سیاسی اور جمہوری اداروں کو بلیک میل کرنے کا ہتھیار ہے۔۔ مسلم لیگ ن آزاد کشمیر کو ہوش کے ناخن لیتے ہوئے سیاسی بصیرت کا مظاہرہ کرنا چائیے۔ میاں نواز شریف کو جموریت دشمن قوتوں کا سامنا ہے مسلم لیگ ن آزاد کشمیر سیاسی اور جمہوری حکومت کے خلاف درپردہ سازشوں میں مصروف ہے وزیر اعظم پاکستان آزاد کشمیر مسلم لیگ ن کی اچھل کود کا نوٹس لیں انھیں سیاسی اور اخلاقی دائرہ کار کا پابند بنائیں آازد کشمیر کے انتخابات میں کشمیر کونسل کے ترقیاتی فنڈز ریاست کی تعمیر ترقی کے بجائے شانگلہ ہل کا بیل انتخابات میں دھاندلی کے لئے سیاسی رشوت کے طور پر تقسیم کئے جا رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ شاہ غلام قادر نیلم کی عوام کا دشمن ہے اس کا پس پردہ ایجنڈا بے نقاب ہو چکا ہے۔ انتظامیہ کو فون کر کے انتہاپسندوں کے کیمپوں کے لئے دباؤ دال رہا ہے۔ حکومت پاکستان کی واضح پالیسی ہے کہ ہر قسم کی شدت پسندی پر پابندی عائد ہے لیکن شاہ غلام قادر کو انتہا پسندوں کے تحفظ کے لئے آمریت کی باقیات نے نیلم کی عوام پر مسلط کر رکھا ہے۔ شاہ غلام قادر نے تعلیمی پیکیج میں رکاوٹیں کھڑی کر کے قوم کے نونہالوں کو تعلیم سے محروم رکھنے کی سازش کی عوام کو روزگار کی فراہمی میں رکاوٹیں کھڑی کر کے وادی نیلم کی تین سو سے زائد آسامیوں پر حکم امتناعی لگا کر عوام کے رزق کی فراہمی کو عدالتی جنگ کی نذر کر رکھا ہے انھوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے اپنی بساط کے مطابق وادی نیلم میں تاریخی کام کئے ہیں موبائل فون سروس کی فراہمی، جامعہ کشمیر کا قیام پچاس سے زائد تعلیمی اداروں کا قیام اپ گریڈیشن، تین سو کلو میٹر سے زائد رابطہ سڑکوں کی تعمیر، ڈسٹرکٹ ہیڈکواٹر ہسپتال، ضلعی دفاتر کی تعمیر سرگن پاور ہاؤس سے بالائی نیلم کو بجلی کی فراہمی، جاگراں پاور ہاوس کی وادی نیلم کو بجلی کی فراہمی، نگدر ،لوات، دواریاں پاورہاوسز کی منظوری، سیلاب اور زلزلہ سے تباہ شدہ پلوں کی تعمیر،57 تعلیمی اداروں کی عمارتوں کی تعمیر کی منظوری دے دی گئی ہے شونٹھر ٹنل کی فزیبلٹی کا کام جون سے پہلے مکمل ہو جائے گا۔ نیلم ایکسپریس وے کو گلگت بلتستان سے منسلک کر کے وادی نیلم میں ترقی اور خوشحالی کا انقلاب برپا ہو جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ وادی نیلم کے عوام شاہ غلام قادر کی مکارانہ باتوں میں نہ آئیں وہ صرف نیلم کی تعمیر ترقی کے لئے روکنے کے لئے آمریت کی باقیات کا مسلط شدہ پرزہ ہے۔ آمروں کی باقیات آہستہ آہستہ احتتام پذیر ہو ری ہیں وادی نیلم سے شاہ غلام قادر کی صورت میں سر نکالنے کی کوشش ہو رہی ہے وادی نیلم کی عوام اور پیپلز پارٹی نے پہلے بھی اپنا مقدس فریضہ سرانجام دیا ہے ۔ عوام اور ملک دشمن عناصر کو واپسی کا راستہ نہیں دیا جائے گا
Scroll To Top