کراچی: جماعت اسلامی کی کشمیر یکجہتی ریلی پر حملہ، متعدد زخمی

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں ’کشمیر ڈے‘ پر جماعت اسلامی کی منعقدہ ریلی پر کریکر حملہ کیا گیا ہے، جس میں کم از کم 39 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ عسکریت پسند قوم پرست جماعت سندھ ریوولیوشنری آرمی نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

جماعت اسلامی کے ترجمان نے بی بی سی کو بتایا کہ جماعت کے کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان کی قیادت میں سوا 6 بجے یہ ریلی یونیورسٹی روڈ پر واقع بیت المکرم مسجد سے نکالی گئی تھی۔ان کا کہنا تھا ’ریلی ابھی چند قدم ہی چلی تھی کہ موٹر سائیکلوں پر سوار حملہ آوروں نے بم پھیکنا، جس سے شدید دھماکہ ہوا اور دو درجن کے قریب کارکن زخمی ہوگئے ہیں جنھیں مختلف ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا۔‘

دھماکے کے بعد حافظ نعیم الرحمان نے ریلی جاری رکھنے کا اعلان کیا اور کہا کہ ایسے بزدلانہ اقدامات سے وہ نہیں ڈریں گے، جس کے بعد یہ ریلی حسن اسکوائر تک پہنچی جہاں اس کا اختتام کیا گیا۔گلشن اقبال پولیس کا کہنا ہے کہ موٹر سائیکل سواروں نے جماعتِ اسلامی کی قیادت کے ٹرک کے قریب یہ کریکر پھینکا اور فرار ہوگئے۔

سندھ کی صوبائی محکمہ صحت کی ترجمان کا کہنا ہے کہ دھماکے میں 39 افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں سے ایک کی حالت تشویشناک ہے جبکہ دیگر کو معمولی چوٹیں آئی ہیں۔ یہ زخمی المصطفیٰ ہسپتال، لیاقت نیشنل، جناح اور آغا خان ہسپتال پہنچائے گئے تھے اور کئی ابتدائی طبی امداد کے بعد فارغ کردییے گئے ہیں۔

Scroll To Top