گائے کی سروس 100 روپے میں

عید الاضحیٰ پر قربانی کے لیے کچھ لوگ اس وقت جانوروں کی تلاش میں ہیں اور کچھ اپنے جانوروں کی خاطر تواضع میں مصروف ہیں جب کہ کورونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والے معاشی بحران کی وجہ سے بیشتر لوگ پریشان بھی ہیں۔

لیکن کراچی کے ایک کار واش سینٹر کے مالک شیخ صغیر کا بزنس ان دنوں عروج پر ہے کیونکہ اس وقت وہاں چار ٹائروں والی گاڑیوں کے بجائے چار ٹانگوں والے جانوریعنی چوپایوں کی” سروس “جاری ہے۔

شیخ صغیر کے سینٹر پر اس وقت  لوگ اپنے بیل، بکرے اور بھیڑیں لا رہے ہیں جہاں قربانی سے قبل ان کو صاف کیا جا رہا ہے۔

شیخ صغیر کا کہنا ہے کہ یہ سلسلہ اس وقت شروع ہوا جب چند سال قبل وہ اپنے ہی ایک جانورکو قربانی سے قبل صاف کرنے کے لیے سروس سینٹر پر لائے۔”جن لوگوں نے دیکھا کہ میں اپنے جانور کو صاف کر رہا ہوں تو وہ کچھ دیر کے بعد اپنے جانوروں کو بھی لے آئےجس کے بعد اس کا ایک سلسلہ چل نکلا۔”

کراچی میں گزشتہ چند سالوں کے دوران عید قرباں کے سیزن میں مون سون کی وجہ سے اکثر منڈیوں میں جانور گندے ہو جاتے ہیں جس کی وجہ سے لوگ یہ محسوس کرتے ہیں کہ انہیں کارواش سینٹر پر لے جا کر صاف کرنا ایک آسان حل ہے جب کہ کورونا وائرس کی وبا کے دوران اس سال اسے ضروری بھی سمجھا جا رہاہے۔

شیخ صغیر اس وقت فی جانور 100 روپے لے رہیں اور لوگوں کی اکثریت کا خیال ہے کہ یہ ایک معمولی رقم ہے۔

یاد رہے کہ ایک اندازے کےمطابق پاکستان میں ہر سال عید الاضحیٰ پر تقریباً ایک کروڑ جانور قربان کیے جاتے ہیں۔

Scroll To Top