سرینگر کے اخبار کا کورونا سے آگاہی کے لئے منفرد قدم

سرینگر(مانیٹرنگ ڈیسک)مقبوضہ کشمیر میں کورونا وائرس ایک سنگین صورتحال اختیار کر چکا ہے ۔کچھ لوگ مقامی آبادی کو اس سلسلے میں آگاہ کرنے کے لئے نئے طریقے ڈھونڈ رہے ہیں۔ انہیں میں سے ایک روزنامہ روشنی ہے ۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق سرینگر میں ایک مقامی روزنامے روشنی  نے ماسک پہننے کی اہمیت اور افادیت کے پیغام کو قارئین تک پہنچانے کے لئے ایک منفرد اقدام کیا ۔ روشنی نے منگل کو اخبار کے پہلے صفحے پر ماسک پہننے کی گزارش بینر کی صورت میں تحریر کرتے ہوئے ایک ماسک بھی چپکایا اور اسے مفت قارئین تک پہنچایا۔ اس طرح سے اخبار نے اپنے قارئین کو حیرت میں ڈال دیا۔
روشنی میں پہلے صفحے پر ایک ادارتی پیغام تیار کیا گیا تھا جس میں ایک ایسے پیکٹ کی طرف اشارہ کیا گیا تھا جس میں ایک ماسک بھی تھا۔ متن میں لکھا گیا تھا کہ ماسک کا استعمال بے حد ضروری ہے اور ساتھ میں ایک ماسک بھی چپکا ہوا تھا۔روزنامہ روشنی کے مارکیٹنگ چیف جہاد شورا نے بتایا کہ انہیں ماسک پہننے کی اہمیت کو سمجھنے کا یہ طریقہ منفرد لگا کیونکہ صبح سویرے جب ایک قاری اخبار خریدے گا تو اس کے ذہن میں یہ پیغام درج ہوگا کہ ماسک پہننا آج کے دور میں کتنا اہمیت کا حامل ہے۔
انہوں نے بتایا کہ بہت سارے لوگوں نے سوشل میڈیا پر اس اقدام کو کافی سراہا۔ بہت سے مقامی لوگوں نے یہ بھی کہا کہ یہ ناشر کے ذریعہ ایک بہت بڑا قدم تھا۔ ‘ایک اخبار کی قیمت تقریبا 2 روپے کی ہے اور اگر پبلشر اس کے ساتھ مفت ماسک دے رہا ہے، وہ صرف اس وجہ سے چاہتے ہیں کہ لوگ اس سے آگاہ ہوں کہ یہ کتنا ضروری ہے۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق گذشتہ چند ہفتوں میں جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کے کیسز میں بتدریج اضافہ ہوتا جا رہا ہے پیر کی رات ایک ہی دن میں مثبت کیسز کی تعداد 750 سے زیادہ پائی گئی۔ مقبوضہ جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے متاثر ہو کر ہلاک ہونے والوں کی تعداد سے 260 سے زائد ہو چکی ہے

Scroll To Top