وزیراعظم، صدر مملکت اور ایم این ایز کے صوابدیدی فنڈز ختم، ، وفاقی کابینہ کے فیصلے

news-1535123088-6497 (1)

اسلام آباد( آن لائن)وفاقی کابینہ نے صدر مملکت، وزیراعظم اور وزراء کے صوابدیدی فنڈز پر پابندی عائد کرنے، ملک بھر کی کچی آبادیوں میں بنیادی سہولیات کی فراہمی کے لئے ٹاسک فورس کے قیام، ہفتے کی چھٹی برقرار رکھنے، لاہور،اسلام آباد، پشاور ماس ٹرانزٹ ٹرانسپورٹ سسٹمز اور اورنج ٹرین لاہور کے منصوبوں کا فرانزک آڈٹ کرانے کی منظوری دیدی ہے جبکہ کفایت شعاری و سادگی مہم کے تحت وزیراعظم اپنے بیرون ملک دوروں کے لئے خصوصی طیارہ استعمال نہیں کریں گے، وزیراعظم، چیف جسٹس، آرمی چیف، وزیر خارجہ سمیت کابینہ کے اراکین بیرون ملک سرکاری دوروں کے لئے فرسٹ کلاس کی بجائے کلب کلاس میں سفر کریں گے، ملک بھر میں بڑے پیمانے پر شجرکاری مہم کا آغاز کیا جائے گا۔

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد  پریس بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ عمران خان کے وزیراعظم بننے کے بعد تواترکے ساتھ کابینہ کے اجلاس ہورہے ہیں،اگلا اجلاس وزیر اعظم نے منگل کو طلب کیا ہے،بڑے شہروں میں بڑے پیمانے پر کچی آبادیاں موجود ہیں،ملک بھر میں کچی آبادیوں کے معاملات کا جائزہ لینے کے لیے ٹاسک فورس بنائی جائے گی ،تمام ماس ٹرانزٹ منصوبوں جیسے ملتان ، اسلام آباد ،لاہور اور اورنج لائن ٹرین منصوبوں کا فرانزک آڈٹ ہوگا ،ضرورت پڑی تو ایف آئی اے کے ذریعے تحقیقات کا دائرہ پھیلایا جائے گا ،تمام منصوبے پارلیمان میں ڈسکس ہوں گے،تحریک انصاف نے کبھی بھی کسی عوامی پراجیکٹ کو بند کرنے کی بات نہیں کی لیکن ہمارا پہلے روز سے مؤقف رہا ہے کہ ان بڑے بڑے پراجیکٹ کے پیچھے کرپشن ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ آج کابینہ نے تاریخی فیصلہ کیا ہے کہ وزیراعظم خصوصی طیارہ استعمال نہیں کریں گے بلکہ وہ فرسٹ کلاس کے بجائے کلب کلاس میں سفر کریں گے، تمام متعلقہ عہدیداروں کا فرسٹ کلاس سفر کا استحقاق ختم کردیا گیا ہے،کابینہ نے وزیروں کو فنڈز جاری کرنے کا اختیار بھی ختم کردیا ہے۔

وزیر اطلاعات نے ہفتے کے روز چھٹیوں کے حوالے سے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ وفاقی کابینہ نے ہفتے کی چھٹی برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ پانچ دن کے دفتری اوقات کار صبح 9 سے شام 5بجے تک ہوں گے۔

Scroll To Top