گورنمنٹ گرلز ہائی سکول تونین میں خاتون ٹیچر کا دسویں جماعت کی طالبہ پرتشدد، خدیجہ کوثر کی ٹانگوں اور دیگر اعضاء پر نشان ابھر آئے،طالبہ نے مذکورہ سکول میں مزید تعلیم جاری رکھنے سے انکار کر دیا

1062315

سماہنی پونا(نمائندہ عدالت)گورنمنٹ گرلز ہائی سکول تونین میں خاتون ٹیچر کا دسویں جماعت کی طالبہ پرتشدد،تشدد سے طالبہ خدیجہ کوثر کی ٹانگوں اور دیگر اعضاء پر نشان ابھر آئے ،طالبہ نے مذکورہ سکول میں مزید تعلیم جاری رکھنے سے انکار کر دیا ،ورثاء شکایت کرنے گرلزہائی سکول تونین گئے تو متعلقہ ہیڈ مس سکول میں حاضر نہ تھی ،متاثرہ طالبہ کے اہل خاندان کے نمائندہ افراد مشتاق حسین ،لیاقت علی ،خالد محمود اور عابد سبحانی نے متاثرہ طالبہ کے ہمرہ تحصیل پریس کلب سماہنی کے صحافیوں کو بتایا کہ ہماری بیٹی کئی روز سے سکول نہ جارہی تھی ،باربار وجہ پوچھنے پر بیٹی نے اپنی ٹانگوں اور دیگر اعضاء پر تشدد کے نشان دکھائے تو ہم ششدررہ گئے ،ہم آج دن متعلقہ ہیڈ مس سے شکایت کرنے گئے تو وہ سکول سے غیر حاضر تھیں ہم بذریعہ میڈیا محکمہ تعلیم کے حکام بالا ،حکومت آزاد کشمیر اور انسانی حقوق کے اداروں سے انصاف کی اپیل کرتے ہوے مذکورہ ٹیچر کے خلاف تحت ضابطہ کاروائی کا مطالبہ کرتے ہیں ۔اس موقع پر متاثر ہ طالبہ نے صحافیوں کو تشدد کے نشان بھی دکھائے اور کہا کہ اگر اس کے ساتھ یہ سلوک روا رکھا جائے تو وہ مذکورہ ادارہ میں تعلیمی سرگرمیوں کا سلسلہ مزید جاری نہ رکھ سکے گی ۔
Scroll To Top