مشرف کے دعوے کے مطابق راحیل شریف نے عدالتوں پر دباﺅ ڈالا ،طاقتورقانون کی خلاف ورزی کر نے کے لیے مستثنیٰ ہیں :عمران خان

will-raheel-sharif-make-imran-pm1

اسلام آباد ( آن لائن )تحریک انصا ف کے چیئر مین عمران خان نے کہا ہے کہ مشرف کے دعوے کے مطابق راحیل شریف نے ان کا نام ای سی ایل سے نکلوانے کے لیے عدالتوں پر پریشر ڈالا جس سے تاثر ملتا ہے کہ اس ملک میں طاقتور کو قانون کی خلاف ورزی کرنے کے لیے استثنیٰ حاصل ہے ۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں عمرا ن خان نے کہاکہ سابق صدر پرویز مشرف نے دعویٰ کیا ہے کہ سابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے ان کا نام ای سی ایل سے نکلوانے کے لیے عدالتوں پر پریشر ڈالا ،اس بات سے تاثر ملتا ہے کہ اس ملک میں طاقتور طبقے کو قانون کی خلاف ورزی کرنے کے لیے استثنیٰ حاصل ہے ۔ان کاکہنا تھا کہ مشتاق رئیسانی نے نیب کے ساتھ پلی بارگینگ کر کے چالیس ارب روپے کی کرپشن کو دو ارب روپے ادا کر کے کلیئر کردیا ہے،اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ نیب کرپشن کو پرموٹ کر رہی ہے اور کرائم کے پیسے وصول کر رہی ہے ۔اس سے قبل عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت دھاندلی کمیشن کی سفارشات پر عمل نہیں کررہی، نوازشریف کاپیچھا نہیں چھوڑیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ حکومت دھاندلی کمیشن کی سفارشات پر عمل نہیں کررہی، حکومت اب کوئٹہ کمیشن کی سفارشات پر عمل کیسے کریگی۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ کوئٹہ کمیشن رپورٹ حکمرانوں کی ناکامی کی کھلی کتاب ہے، کمیشن رپورٹ حکمرانوں کو گھر بھیجنے کیلئے کافی ہے۔ اپنے ایک ویڈیو بیان میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا تھا کہ 25دسمبر کو دوپہر 2بجے صوابی میں بڑا جلسہ کرنے آرہاہوں، اس جلسے میں دو باتیں ہونگی ، ایک تو ہم سی پیک منصوبے پر اپنے تحفظات بتائیں گے اور اس کیلئے تجاویز دینگے کہ کیسے ایک منصفانہ طریقہ سے سی پیک کا فائدہ تمام صوبوں کو دیا جاسکتا ہے۔ دوسری بات پانامہ پیپرز پر ہوگی، ہم یہ بتائیں گے کہ پاکستان کیلئے کیوں یہ فیصلہ کن وقت ہے، ہم نے فیصلہ کرنا ہے کہ ہمیں کس قسم کا پاکستان چاہئے۔
Scroll To Top