مقامی ہائی ایس کے عملہ کی طرف سے مبینہ طور پر کالج پرنسپل کو گاڑی کی فرنٹ سیٹ پر نہ بٹھانے پر طلباء نے روڈ بلاک کر دی،گاڑی پر خوب ڈنڈے برسائے،فرنٹ سکرین توڑ دی،ٹریفک جام

art_go_416142_1506

چوکی سماہنی (تحصیل رپورٹر)چوکی بازار میں گورنمنٹ بوائز انٹر کالج چوکی کے طلبا نے مقامی ہائی ایس کے عملہ کی طرف سے مبینہ طور پر کالج پرنسپل کو گاڑی کی فرنٹ سیٹ پر نہ بٹھانے پر مین سڑک بلاک کر دی اور ہائی ایس کا راستہ روک لیا ،گاڑی پر ڈنڈے برسائے ،فرنٹ سکرین توڑ دی ،سڑک کی بندش سے ٹریفک بلاک ،مقامی ہائی ایس مالکان کے حامی بھی بڑی تعداد میں موقع پر پہنچ گئے ،پولیس اور مقامی سیاسی وسماجی شخصیات نے موقع پر پہنچ کر بچ بچاؤ کرایا ،بڑا تصادم ہوتے ہوتے رہ گیا ،گاڑی مالک شیخ صغیر احمد کے مطابق انکی گاڑی روزانہ سماہنی سے میرپور جاتی ہے منگل کے روز صبح کے وقت پرنسپل بوائز انٹر کالج چوکی کو گاڑی میں فرنٹ سیٹ نہیں ملی جس پر انھوں نے طلباکو فون کر کے مطلع کیا اور طلبا نے مشتعل ہو کر مین سڑک بلاک کر کے ہائی ایس گاڑی کا راستہ روک لیا اور گاڑی کو شدید نقصان پہنچایا ،اسی دوران مقامی ہائی ایس مالکان کے حمایتیوں کی بڑی تعداد بھی موقع پر پہنچ گئی صورتحال کشیدہ ہونے پر پولیس تھانہ چوکی کے ایس ایچ او مرزا شبیر حسین ہمراہ پولیس نفری جبکہ سیاسی وسماجی شخصیات بھی موقع پر پہنچ گئیں اور طلبا ومقامی لوگوں کے درمیان بڑا تصادم ہوتے ہوتے رہ گیا ،اسسٹنٹ کمشنر سماہنی راجہ محمد عارف بھی واقع کی اطلاع ملتے ہی پولیس تھانہ چوکی پہنچ گئے ،پولیس نے طلبا کو منتشر کر کے سڑک کو ٹریفک کے لئے کھلوا دیا جبکہ گاڑی مالکان کی درخواست پر پرنسپل بوائز انٹر کالج چوکی محمد حسین آزاد ودیگر نامعلوم افراد کیخلاف واقع کی ایف آئی آر بھی درج کر لی گئی ہے جبکہ پولیس نے مزید تفتیش شروع کر دی ہے ۔۔دریں اثنا کالج پرنسپل چوہدری محمد حسین آزاد نے صحافیوں کو اپنا موقف دیتے ہوئے کہا کہ میرا اس واقعے سے کوئی تعلق نہیں ہے طلبا اور ٹیچرز حضرات کیساتھ ٹرانسپورٹرز اکثر بدتمیزی کرتے ہیں اور گاڑی میں بٹھاتے بھی نہیں جس پر طلبا نے ہائی ایس کا راستہ روکا ہے ،طلبا کی طرف سے احتجاج پر کچھ افراد نے کالج میں گھس کر سٹاف کیساتھ بدتمیزی کی اور طلبا پر حملہ آور بھی ہوئے جسکی اطلاع پولیس تھانہ چوکی میں کر دی ہے
Scroll To Top