حکومت آزادکشمیر کی طرف سے صدارتی آرڈیننس کے تحت میرٹ کی پامالی کے خلاف سیاسی وسماجی جماعتوں اور سول سوسائٹی کے نمائندوں کا شہید چوک پر احتجاجی مظاہرہ ،روڈ بلاک کر دی

aaa

کوٹلی ( بیورو رپورٹ) حکومت آزادکشمیر کی طرف سے صدارتی آرڈیننس کے تحت میرٹ کی پامالی کے خلاف سیاسی وسماجی جماعتوں اور سول سوسائٹی کے نمائندوں کا شہید چوک پر احتجاجی مظاہرہ ، سڑک بلاک کر دی ۔ پیپلزپارٹی ، پاکستان تحریک انصاف ، جماعت اسلامی ، جموں وکشمیر نیشنل عوامی پارٹی ، لبریشن فرنٹ ، مسلم کانفرنس، انجمن تاجران ، متحدہ ایکشن کمیٹی اور طلباء تنظیموں کے عہدیداران نے حکومت آزادکشمیر کے خلاف پی ڈبلیوڈی ریسٹ ہاوس سے شہید چوک تک احتجاجی ریلی نکالی ، جس میں بڑی تعداد میں سیاسی وسماجی جماعتوں کے کارکنوں نے شرکت کی، ریلی کے شرکاء نے ہاتھوں میں سیاہ جھنڈے اور بینرز اٹھائے ہوئے تھے اور صدارتی آرڈیننس پر وزیر اعظم اور صدرآزادکشمیر کے خلاف شدید نعرہ بازی کی ، میرٹ کا قتل عام نا منظور نامنظور، نوجوانوں کو روزگار فراہم کرو، پی ایس سی کے امتحان میں کامیاب امیدواروں کو ان کا حق دو، نعروں سے فضاء گونج اٹھی۔ ریلی شہیدچوک پر پہنچی جہاں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرے سے پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی ترجمان خواجہ عطامحی الدین ایڈووکیٹ، پیپلزپارٹی کے سید فرحت عباس کاظمی ، مسلم کانفرنس کے سنیئر رہنماء خالد مرزا، پہلوان ذوالفقار ، متحدہ ایکشن کمیٹی کے سیکریٹری صاحبزادہ سید مظہرکاظمی ایڈووکیٹ، اعجاز مغل ،پی ٹی آئی کے رہنماء ظہیر چوہدری ، جموں وکشمیر نیشنل عوامی پارٹی کے ضلعی جنرل سیکریٹری الیاس رولوی ، انجمن تاجران کے مرکزی صدر ملک یعقوب ، سینئر نائب صدر راجہ رحیم ، لبریشن فرنٹ کے رہنماء صدیق راٹھور ، سماجی رہنماء بابر بیگ ،عارفین لون، این ایس ایف کے رہنماء جنید چوہدری ، حنین راٹھور، پی ٹی آئی یوتھ ونگ کے رہنماء سید علی راکب کاظمی ،کوارڈینیٹر جمیل منہاس اور دیگر سیاسی و سماجی جماعتوں کے عہدیداران نے خطاب کیا۔اسٹیج سیکریٹری کے فرائض متحدہ ایکشن کمیٹی کے سیکریٹری صاحبزادہ سید مظہرکاظمی ایڈووکیٹ نے سرانجام دئیے ۔مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کا کام نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنا ہے ، پبلک سروس کمیشن کو آرڈیننس کے ذریعے ختم کرنا میرٹ اور نوجوانوں کے معاشی قتل کے مترادف ہے جس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں ،حکومت کو متاثرہ امیدواروں کے والدین کے آنسووں کا حساب دینا ہو گا۔ جمہوری حکومتوں کے ایسے اقدامات آمریت کی نشاندہی کرتے ہیں۔ کامیاب امیدواروں کو ان کا حق ملنے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔ انھوں نے کہا کہ حکومت کا رویہ کمیشن کو تحلیل کرنے میں جلدبازی امتحان کو ختم کرنے کی سازش ہے، پی ایس سی کے مقابلے کے امتحان میں کامیاب امیدواروں کے ساتھ کھڑے ہیں کسی کو نوجوانوں کا حق سلب کرنے کی اجازت نہیں دیں گے ، اگر حکومت نے ایسا کیا توبھرپور تحریک چلائیں گے اور منزل کے حصول تک چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔انھوں نے کہا کہ حکومت آزادکشمیر میرٹ کی بالادستی کا منشور لے کر اقتدار میں آئی ہے لیکن عملی طور پر حکومت نے میرٹ کا قتل عام شروع کر دیا ہے اور اداروں کو مفلوج کیا جا رہا ہے ۔حکومت اپنے لوگوں کے ایڈجسٹ نہ ہونے کی سزا نوجوانوں کو کیوں دی جا رہی ہے جنھوں نے سالوں تیاری کر کے مقابلے کے امتحان میں کامیابی حاصل کی اور وہ نوکریوں کے منتظر ہیں۔ ان کامیاب امیدواروں نے ایک بار نہیں ، بلکہ دو بار امتحان پاس کیا،حکومت ان کا حق دے ۔انھوں نے کہا کہ سیاسی وسماجی جماعتیں نوجوانوں کے حقوق کیلئے متحد ہیں اور اس حوالے سے لائحہ عمل تشکیل دے دیا گیا ہے ، حکومت نے اگر مداخلت بند نہ کی اور کامیاب امیدواروں کو ان کا حق نہ دیا تو اگلے ہفتے سے شہیدچوک پر علامتی بھوک ہڑتال کا سلسلہ شروع کیا جائے گا۔ مرحلہ وار احتجاجی مظاہروں کے ساتھ شٹرڈاؤن کی کال دیں گے۔
Scroll To Top