بھارت باز نہیں آئے گا،پاکستان اینٹ کا جواب پتھر سے دے:بیرسٹر سلطان

berister sultan

اسلام آباد( کے این آئی)آزاد کشمیر کے سابق وزیر اعظم وپی ٹی آئی کشمیر کے صدر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان ً اب کے مار ً کی پالیسی ترک کرے اور وہ اینٹ کا جواب پتھر سے دے کیونکہ بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کر مراسلے دینے سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔ کیونکہ ہندووء بنئیے کی ایک مخصوص ذہنیت ہے اور وہ اس وقت تک مکروہ حرکتیں کرتا رہے گا جب تک کہ اسے منہ توڑ جواب نہ دیا جائے۔لائن آف کنٹرول پر بھارتی فوج کی طرف سے نہتے شہریوں پر فائرنگ اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے کہ بھارت اپنے عزائم سے باز نہیں آ رہا۔مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیری بھارتی درندی کا شکار ہو رہے ہیں لہذا اب حکومت پاکستان اپنی معذرت خواہانہ پالیسی ترک کرے اور پاکستان کے نائب وزیر خارجہ نومنتخب امریکی صدر ڈونل ٹرمپ کی ٹیم سے ملاقات کے لئے دوہفتے امریکہ میں مقیم رہے لیکن انہیں اس میں انہیں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔ یہی وقت اگر پاکستانی نائب وزیر خارجہ بھارت کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کہ اسے یہ باور کراتے کہ اگر وہ باز نہ آیا تو اسکے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔نئے آرمی چیف جوکہ کمانڈر 10 کور بھی رہیں ہیں اور وہ اس سارے علاقے سے واقف ہیں۔ان سے ہم کشمیریوں کو بڑی توقعات بھی ہیں اور وہ جب تک بھارت کو اسکی بربریت کا جواب نہیں دیں گے وہ اپنی مکروہ حرکتیں جاری رکھے گا۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے آج یہاں پی ٹی آئی کشمیر کے مرکزی سیکریٹیریٹ میں اخبار نویسوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ بھارت دس روز پہلے تک لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزیاں کرتا رہا اور اس سے ہمارے بچے اور پاک فوج کے جوان بھی شہید ہوتے رہے۔ لیکن اب اس نے نکیال سیکٹر میں بچوں کی بس پر فائرنگ کی جس سے ڈرائیور شہید ہو گیا اوربچے زخمی ہو گئے۔پاکستان کوبھارت کی طرف سے اس خلاف ورزی پر انٹرنیشنل فورم بالخصوص انسانی حقوق کی تنظیموں کی توجہ اس جانب مبذول کرانی چاہیے۔پاکستان کے نائب وزیر خارجہ دو ہفتے تک ٹرمپ کی ٹیم سے ملنے کی کوشش کرتے رہے اور اس میں ناکامی کے بعد واپس آگئے۔اگر یہی توانائیاں وہ عالمی سطح پر مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم کے خلاف آواز پر خرچ کرتے تو شاید حالات بہتر ہو جاتے
Scroll To Top