کوٹہ سسٹم ختم جلدکرد یں گے،پیپلز پارٹی کے تمام منصوبوں کو دیکھیں گے کہ ان کی ضرورت بھی ہے یا نہیں:طارق فاروق

tariq-farooq

بھمبر (بیورورپورٹ)سنیئر وزیر حکومت چوہدری طارق فاروق نے کہا ہے کہ تحریک آزادی کشمیر میں آزاد حکومت اور بیس کیمپ کے کردار کو فعال کرنا وقت کی سب سے اہم ضرورت ہے تمام تر نظریاتی اختلافات کے باوجود ساری کشمیر ی قوم کی حق خودارادیت پر یکجا کرنا ہماری حکومت کی ترجیج نمبر ون ہے تاکہ کشمیری قوم اتحاد و اتفاق سے آزادی کی منزل حاصل کرسکیں گڈ گورننس اور دیر پا ترقی ہمارے ہد ف میں جس کے لیے ہم نے کام شروع کردیا ہے جس کے ثمرات بہت جلد لوگوں کو ملنا شروع ہوجائیں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، انہوں نے کہا گزشتہ چند ہفتوں میں مجھے وکلا کے متعدد فنکشنز میں جانے کا اتفاق ہوا ہے قانون ساز اسمبلی سے لے کر آپ کی بار تک قحط الرجال نظرآتا ہے مجھے لطیف اکبر اور چند ممبران کے علاوہ قانون سازی پر کوئی بات کرتا نظر نہیں آتا ، میں پچھلے دور میں کہتا آیا ہوں �آ قانون ساز اسمبلی کا نام بدل کر ڈ یو یلپمنٹ اسمبلی رکھ لیں اس تنزی میں کس کا قصور کا اس کا جائز ہ لینے کی ضرور ت ہے چوہدری طارق فاروق نے کہا آزادکشمیر میں زیادہ تر قانون سازی کی بنیاد سپریم کورٹ کے فیصلے بنے ہیں ہمارا اپنا کردار کم ہے چوہدری طارق فاروق نے کہا سابق حکومت نے جتنے بھی کام لیے ہیں ان سب پر ہم دربار غور کررہے ہیں کہ ان کی ضرورت بھی ہے کہ نہیں اس کے لیے عدالت کا فیصلہ خوش آئیند ہے ہم وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر کی قیادت میں اصلاحات لارہے ہیں تاکہ ریاست کے شہریوں کو مساوات کے اصولوں کے تحت اپنا پورا حق مل سکے انہوں نے کہا کہ کوٹہ سسٹم بنیاد ی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے اس کے خاتمے کی خوشخبری عوام جلد سنیں گے اور آزادکشمیر کا ہر شہری اپنی اہلیت کی بنیاد پر اپنا حق حاصل کرے گا انہوں نے کہا ہم آزاد کشمیر کا بحت بڑھانے کے لیے کوشش کررہے ہیں اس کے لیے وزیر اعظم نے دوسرے صوبوں کے وزرا ء اعلی سے ملاقاتیں بھی کی ہیں ہماری کوشش ہے کہ ہمارا حصہ بلوچستان کے برابر ہو انہوں نے کہا کہ ہمارا آئندہ کا بجٹ 12 ارب سے بڑ ھ کر 25 ارب روپے ہوگا جس کی منظوری وزیراعظم پاکستان دے چکے ہیں جس کا جلد وہ باقاعدہ اعلان کریں گے اس موقع پر انہوں نے بار کے لیے 5 لاکھ اور لائبریر ی کے لیے 5 لاکھ روپے کا اعلان کیا اس موقع پر سابق وزیر مرزا شفیق جرال نے بھی خطاب کیا ۔
Scroll To Top