حکومت کیلئے مشکلات کا سامنا،موجودہ حکومت کو 6ماہ پورے ہوتے ہی وزارت عظمیٰ کی تبدیلی کے لیے پاور آف شو کیا جائے گا،20سے زائد ممبر قانون سا زاسمبلی نے خفیہ ملاقاتوں کا سلسلہ بڑھا دیا

Farooq haidar

مظفرآباد(یو این پی) وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر خان کی ہٹ دھرمی (ن) لیگ میں اختلافات‘ حکومت کیلئے مشکلات کا سامنا‘ 20سے زائد ممبر قانون سا زاسمبلی نے خفیہ ملاقاتوں کا سلسلہ بڑھا دیا۔موجودہ حکومت کو 6ماہ پورے ہوتے ہی وزارت عظمیٰ کی تبدیلی کے لیے پاور آف شو کیا جائے گا۔ یو این پی کے مطابق وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ دفاروق حیدر خان کی جانب سے پالیسی میں ردبدل ہٹ دھرمی کے باعث ممبران قانون ساز اسمبلی موجودہ حکومت سے اندرون خانہ ناراض ہوگئے جس کے باعث ممبرا ن کو نہ وزارتیں ملیں نہ ہی کابینہ میں توسیع جبکہ ممبر کشمیر کونسل کے انتخابات کے لئے بھی وفاق نے آزادکشمیر کے فیصلوں کو مسترد کرکے اپنے ممبر ان کو ٹکٹ جاری کردئیے جس کے بعد مسلم لیگ(ن) آزادکشمیر میں اختلافات کی شدت میں اضافہ ہوگیا جبکہ اندرون خانہ ممبران قانون ساز اسمبلی اور وزراء کی ملاقاتیں جس میں تمام تر معاملات پر تبادلہ خیال کیا جبکہ فاروڈبلاک کوٹلی سہنسہ سے تعلق رکھنے والے قانون ساز اسمبلی جبکہ حلقہ چار کھاوڑہ ،حلقہ 6لیپہ ، حلقہ ایک کوٹلہ سمیت میر پور جبکہ مہاجرین کی نشستوں پر 12اراکین نے فاروڈ بلاک کی حمایت کا اعلان کردیا ہے فاروڈ بلاک نے آزادکشمیر کی حکومت کو 6ماہ پورے ہوتے ہی وزارت عظمیٰ کی تبدیلی کے لئے تحریک جمع کروانے کے لئے ہوم ورک شروع کردیا جبکہ نئے وزارت عظمیٰ کے لئے تین ناموں پر غو ر فکر جاری ہے جس میں سے ایک کا تعلق کوٹلی سے ہے 20ممبرانوں کا مشاورتی اجلاس آئندہ چند روز میں اسلام آباد میں ہونے کا امکان ہے جس میں تمام تر معامالات طے کئے جائیں گے جبکہ آزادکشمیر میں وزارت عظمیٰ کی تبدیلی کا فیصلہ ہٹل جس میں وفاقی مسلم لیگ (ن) کی قیادت سے بھی مشاورت کرنے کے بعد اگاہ کردیا گیاہے ۔
Scroll To Top