کشمیریوں نے اپنی آزادی کے لئے پرامن جدوجہد کا آغاز کر رکھا ہے،کشمیری یہ پوچھتے ہیں کہ بھارت کے بے پناہ مظالم پر دنیا خاموش کیوں ہے:مشعال ملک

dsc_5281

مظفرآباد(پ ر)سینئر حریت راہنما یاسین ملک کی اہلیہ محترمہ مشعال ملک نے کہا ہے کہ دنیا کشمیر میں بھارتی مظالم کانوٹس لے ۔ کشمیریوں نے اپنی آزادی کے لئے پرامن جدوجہد کا آغاز کر رکھا ہے اور کشمیریوں کی یہ پرامن جدوجہد دنیا بھر کے لئے رول ماڈل ہے۔کشمیری یہ پوچھتے ہیں کہ بھارت کے بے پناہ مظالم پر دنیا خاموش کیوں ہے۔ برھان مظفر وانی کی شہادت کے بعد مقبوضہ کشمیر کے اندر پانچ ماہ سے آزادی کی پرامن تحریک جاری ہے اور اس تحریک کو دبانے کے لئے ہندوستان انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا مرتکب ہو رہا ہے اور جنگی رائم کا ارتکاب کر رہا ہے ۔ سیز فائر لائن پر سویلین آبادی کو نشانہ بنانا سنگین جنگی جرم ہے اگر دنیا نے کشمیریوں کی پرامن جدوجہد کا نوٹس نہ لیا تو کشمیر کے اندر دوبارہ مسلح جدوجہد کو کوئی نہیں روک سکے گا۔ دنیا کو دھشت گردی اور آزادی کی تحریوں کا فرق سمجھنا ہو گا۔ ہندوستان مقبوضہ کشمیر اور سیز فائر لائن پر جن جنگی جراٗم کا ارتکاب کر رہا ہے اس پر عالم پابندیاں عائد کی جانی چاہئیں۔ کشمیراپنی آزادی کی تحریک کو تب ہی کامیابی سے ہمکنار کر سکتے ہیں جب سب ایک ہوں گے۔ کشمیریوں کو بین الاقوامی سطح پر اپنا موقف خود پیش کرنا ہو گا۔ ان خیلات کا اظہار انہوں نے مرکزی ایوان صحافت میں پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔ ان کاکہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں جاری عوامی تحریک کے دوران بھارت نے ظلم و جبر کی انتہا کر دی ہے نہتے عوام پر خطرناک ہتھیار استعمال کئے جا رہے ہیں اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں کالے قوانین کے ذریعے کشمیریوں پر عرصہ حیات تنگ کر دیا گیا ہے۔ 110فراد کو شہید کیا گیا ہے ہزاروں افراد قید ہیں۔ اب لائن آف کنٹرول پر بھارت نے جنگ مسلط کر رکھی ہے۔ اور دنیا بھارت کی دھشت گردی پر خاموش ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کا ادارہ ناکام ہو گیا ہے اس کا حال بھی لیگ آف نیشن جیسا ہو گا۔ کشمیری آزادی کے مطالبے سے کسی صورت میں دستبردار نہیں ہونگے۔مقبوضہ کشمیر کے اندر کل جماعتی حریت کانفرنس ایک پلیٹ فارم پر متحد ہے ۔ دنیا یہ بھی یاد رکھے کہ جب تک کشمیریوں کو آزاد ی کا حق نہیں ملتا اس وقت تک سی بی ایمز کامیاب نہیں ہونگے۔ ان کا کہنا تھا کہ کشمیر میں کشت و خون بند کرانے کے لئے عالمی برادری کو اپنا ذمہ دارانہ کردار ادا کرنا ہوگا۔ دنیا مزید کب تک کشمیریوں کی لاشیں گرنا دیکھنا چاہتی ہے۔ آخر کب تک دنیا کشمیریوں کے خون پر خاموش رہے گی۔
Scroll To Top