میرپورشہیدوں اورغازیوں کی سرزمین ہے، پرائیویٹ شعبہ کو ترقی دے کرمعاشی خود کفالت حاصل کر یں گے:صدر آزاد کشمیر کا میرپور میں خطاب

sadar

میرپور ( کے این آئی)صدر آزاد جموں وکشمیر سردار محمد مسعود خان نے کہاہے کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیرپرناجائز قبضہ کیاہواہے جبکہ آزادکشمیرکاخطہ یہاں کے مجاہدوں نے اپنے زور بازوں سے لڑھ کرآزادکروایا۔جب بھارت نے 27 اکتوبر1947 کو کشمیرمیں اپنی فوجیں داخل کیں اس وقت کوئی الحاق کی دستاویز موجود نہیں تھیں یہ بات پایا ثبوت کو پہنچ چکی ہے کہ بھارت نے غاصبانہ قبضہ کررکھاہے ۔ ہمارامقدمہ مضبوط اور مبنی برحق ہے۔ لہذا ہمیں اپنے اندر اتحاد ، اتفاق اور ہم آہنگی پیداکرکے ایک آواز ہوکر اقوام عالم کے ایوانو ں میں اپنی بات پہنچانی چاہیے تاکہ اس میں وزن ہو۔ تحریک آزادی کشمیر کے تناظرمیں میڈیا کا بڑا اہم رول ہے ۔ پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا تحریک آزادی کشمیرکے تناظرمیں اپنابھرپورکلیدی کردار اداکرے۔ اس سلسلہ میں صحافی اور وکلاء برادری تحریک آزادی کشمیر کے قانونی پہلوؤں کو اجاگر کرتے ہوئے اس مسئلے پربین الاقوامی سطح پربحث کا آغاز کریں۔پاک چائنہ اقتصادی راہداری میں میرپورکابڑا حصہ ہوگاجس سے ریاست بھرمیں معاشی خوشحالی آئے گی ۔ہمیں سی پیک کے ثمرات سے مستفید ہونے کے لیے تیاری کرناہوگی۔ آزادکشمیر کو خود کفیل بنانے کے لیے پرائیویٹ سیکٹر کو متحرک اور فعال کرنا ہوگااور اپنے ذرائع آمدن پیداکرنے ہوں گے۔ متاثرین منگلاڈیم کے مسائل حل کیے جائیں گے۔ بھارت کی طرف سے سیز فائرلائن کی خلاف ورزیوں اور جارحیت کی بھرپور مذمت کرتے ہیں۔ بھارتی فائرنگ سے متاثرہ علاقوں کے عوام کو ہرممکن سہولیات ومراعات دیں گے۔ ان خیالات کااظہار انھوں نے یہاں پریس کانفرنس اور ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ پریس کانفرنس کے موقع پرآزادجموں وکشمیراسمبلی کے ممبرچوہدری محمدسعید بھی موجود تھے جبکہ ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کی تقریب سے صدر ڈسٹرکٹ بار ذوالفقار احمدراجہ ایڈووکیٹ، سیکرٹری جنرل چوہدری تحسین احمدایڈووکیٹ، حافظ ارشد ایڈووکیٹ نے بھی خطاب کیاجبکہ اس موقع پروکلاء کی بڑی تعداد موجود تھی۔ صدر آزادکشمیر سردارمحمدمسعود خان نے کہاکہ میرپورشہیدوں اورغازیوں کی سرزمین ہے جس کاآزادکشمیرکی تجارت ، معیشت ، علم و ادب، سیاست اور روحانیت میں ایک نمایاں کردار ہے۔ انھوں نے کہاکہ یہ ہمارے آباؤاجداد کی لازوال قربانیوں کا ثمرہے کہ ہم آزادی کی نعمت سے سرشارہیں جبکہ مقبوضہ کشمیرکے عوام 70 برسوں سے نہ صرف آزادی کی نعمت سے محروم ہیں بلکہ کوئی دہائی ایسی نہیں گزری کے ان پرظلم وستم کے پہاڑ نہ توڑے گئے ہوں۔ صدرریاست نے کہاکہ جب مستقبل کامورخ حریت کی تاریخ رقم کرے گا تو اس میں کشمیریوں کی حریت سرفہرست ہوگی۔ کیونکہ تاریخ اقوام میں ایسی جدوجہد کی مثال نہیں ملتی۔ سردار محمدمسعود خان نے کہاکہ آزادکشمیرکے عوام پاکستان کے دفاع کاحصہ ہیں ہمارے مفادات مشترک ہیں۔ انھوں نے کہاکہ پاکستان نے کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ کشمیری عوام پرچھوڑ رکھاہے جب کہ بھارت کشمیر کو اٹوٹنگ بنانے کی ضد پراڑ اہواہے ۔انھوں نے سیز فائرلائن پربھارتی افواج کی طرف سے بلااشتعال فائرنگ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاکہ عالمی برادری کو بھارتی جارحیت کانوٹس لیناہوگا ۔ سیز فائرلائن پرآباد نہتے شہریوں پرتسلسل کے ساتھ فائرنگ کرکے بھارت نے جنگی ماحول پیداکررکھاہے۔ انھوں نے کہاکہ حکومت آزادکشمیرحکومت پاکستان پرمعاشی انحصا ر کرنے کی بجائے پرائیویٹ شعبہ کو ترقی دے کرمعاشی خود کفالت حاصل کرے گی۔ آزادکشمیرقدرتی وسائل سے مالامال ہے جن کو ترقی دیکر خطہ کی تمام ضروریات کوپوراکیاجاسکتاہے۔ اس سلسلہ میں مربوط اور جامع حکمت عملی ترتیب دی جائے گی۔ صدر آزادکشمیرنے تجویز کیاکہ آزادکشمیرسے جودرجنوں اخبارات شائع ہورہے ہیں وہ عالمی میڈیا کے ساتھ اشتراک عمل پیدا کر کے تحریک آزادی کشمیر کو اجاگرکرنے میں کلیدی کردار اداکرسکتے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیرمیں تو کوئی دہشت گردی نہیں ہورہی وہاں لشکرطیبہ اور جیش محمدجیسی تنظیموں کاکوئی وجود نہیں ہے۔ کشمیریوں کا حق خود ارادیت مسلمہ ہے اور پوری قوم اس پرمتفق اورمتحد ہے۔ اقوام متحدہ کی زیرنگرانی استصواب رائے کے بعد ہی کشمیری اپنے مستقبل کافیصلہ کریں گے۔ اس سے پہلے کشمیری قوم کو مختلف نظریات کی بنیاد پرمنقسم نہ کیاجائے۔ انھوں نے کہاکہ بھارتی خفیہ ایجنسی کشمیریوں کو مختلف جھانسے دے کر تقسیم کرکے ان کی آواز کو کمزور کرنے کے لیے کوشاں ہے ۔ انھوں نے کہاکہ قبائلی لشکروں کے حوالے سے بھی حقائق تلاش کرنے ہوں گے۔ بعض کشمیری انھیں اپنامحسن سمجھتے ہیں اور بعض کے خیالات مختلف ہیں۔ اس وقت اتحادوں اور حلیفوں کی ضرورت ہے۔ ماضی کو کرید کرمخالفوں میں اضافے کرنے کی ضرورت نہیں ۔ پاکستان نے کشمیریوں کی جنگ ہرمحاذ پرلڑی ہے جس میں اسے اپنے آدھے وجود سے محروم ہوناپڑا۔ اس پر جنگیں مسلط رہیں جس کی وجہ سے اسے ایٹمی صلاحیت حاصل کرناپڑی ۔ آج بھی اقوام عالم میں کوئی ریاست کشمیریوں کی حامی ہے تو وہ صرف اور صرف پاکستان ہے جوہرپلیٹ فارم پرہمارے لیے جرات مندی سے آواز بلند کرتاہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
میرپور (کے این آئی)صدر آزاد جموں وکشمیر سردار محمد مسعود خان نے کہا ہے کہ کشمیراور پاکستان لازم وملزوم ہیں۔کشمیریوں کو پاکستان کی حکومت اور عوام پر فخر ہے ۔ مسئلہ کشمیر کی وجہ سے پاکستان کو جوہری صلاحیت حاصل ہوئی ۔وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کو اقوام عالم کے سامنے بے نقاب کیا تو بھارت کی چیخیں نکل گئیں بھارت نے مسئلہ کشمیر سے عالمی توجہ ہٹانے کے لئے اوڑی کا ڈرامہ رچایا ۔بھارت کشمیریوں کا اپنی سر زمین پر قتل عام کررہاہے اور دہشت گردی کر رہا ہے۔ بھارت کی 7 لاکھ مسلح افواج کے سامنے کشمیری بے سروسامانی کے عالم میں جب عورتوں ،بچوں پر ڈھائے جانے والے مظالم اور وحشت کا نشانہ بنانے پر مزاحمت کرتے ہیں تو بھارت انہیں دہشتگرد قرار دیتا ہے حالانکہ بھارت کا جموں وکشمیر پر تسلط غیرقانونی اور غیرآئینی ہے جیسے کشمیریوں نے مسترد کررکھا ہے،کشمیری صرف اور صرف حق خودارادیت چاہتے ہیں ۔ تحریک آزادی کشمیر کو عملی جامعہ پہنانے کے لئے ہماری ذمہ داریاں بڑھ گئیں ہیں ۔مسئلہ کشمیر کو حقیقی تناظر میں بین الاقوامی برادری کے سامنے اجاگر کرنے کے لئے ذرائع ابلاغ کی طرف توجہ دینا ہوگی ۔مسلم لیگ ن کی حکومت نے وزیراعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان کی سربراہی میں تحریک آزادی کی کامیابی ،گڈگورنس،میرٹ اورخطہ کی تعمیروترقی کو اپنی ترجیحات میں رکھا ہوا ہے ۔آزاد کشمیر کو سی پیک کا حصہ بنائیں گے۔آزاد کشمیر کی یونیورسٹیوں کو اقتصادی راہداری کے مفادات سامنے رکھتے ہوتے ہوئے تعلیم دینا ہوگی۔نوجوانوں کو سرکاری نوکریوں کے چکر سے نکال کر پرائیویٹ سیکٹر کو مضبوط کرنا ہوگا ۔اوورسیز کشمیری برطانیہ اور یورپ میں مسئلہ کو عالمی سطح پراجاگر کرنے میں اہم کردار اداکررہے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسلم یوتھ ونگ کے زیراہتمام کشمیر کانفرنس سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا ۔کانفرنس کی صدارت مسلم لیگ کے راہنما شجاع حیدر لودھی ایڈووکیٹ نے کی جبکہ نظامت کے فرائض بشیر ضیائی نے سرانجام دیئے۔ کانفرنس سے آزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے ممبران چوہدری محمد سعید ،چوہدری رخسار احمد ،سابق چیئرمین ایم ڈی اے ڈاکٹر چوہدری محمد امین ۔مسلم یوتھ ونگ کے راہنما انجینئرچوہدری رضوان انور،ملک سہیل اعوان ،راجہ تسلیم انجم کے علاوہ دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا ۔اس موقع پر مسلم لیگ ن ،مسلم یوتھ ونگ اور شعبہ خواتین کی بڑی تعداد موجود تھی ۔صدر آزاد کشمیر سردار محمد مسعود خان نے کہا کہ پبلک سیکٹر سیاسی ایڈجسٹمنٹ کی وجہ سے بہت پھیل چکا ہے اب پرائیویٹ سیکٹر کو مضبوط کرنا ہوگا ۔ مسلم لیگ ن کی حکومت آزاد کشمیر میں گڈگورنس اور میرٹ کی بالادستی قائم کرئیگی اگر چہ یہ ایک بڑا مشکل اور تلخ کام ہے ۔سرکاری نوکریوں کے لئے سیاسی مداخلت غلط اور ناجائز ہے یہی سفارش اور سیاسی اثر و سو خ ہمارے لیے استعمال ہو تو وہ بھی جائز نہیں ہونا چاہیے ایسے رجحانات کی آئندہ حوصلہ شکنی کی جائے گی ۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ ریاست جموں وکشمیر میں بھارت گزشتہ 70 برسوں سے ناجائز قبضہ کرکے اپنی مسلح افواج کے ذریعے نہتے کشمیریوں پر ظلم وجبر کے پہاڑ توڑ رہا ہے اور عالمی امن کی علمبرداراقوام متحدہ بھی مقبوضہ کشمیر میں رائے شماری کروانے میں مصلحت کا شکار ہے ۔انہوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کشمیریوں کو اپنا مقدمہ دنیا کے سامنے حقیقی تناظرمیں پیش کرنے کے ذرائع ابلاغ کے ذریعے دنیا کی توجہ اس طرف دلانا ہوگی اور بھارت کی مقبوضہ کشمیر میں مذموم کارروائیوں کوبھی دنیاسے سامنے بے نقاب کرنا ہوگا ۔انہوں نے کہاکہ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق اجاگر کیا ہے۔ حکومت پاکستان مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بین الاقوامی برادری کی بھی حمایت حاصل کررہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے ہمیں ہندوستانی بے بنیاد پروپیگنڈے کا توڑ کرنا ہوگا اور بین الاقوامی برادی کو مسئلہ کشمیر کے اصل حقائق سے آگا ہ کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ اہلیان میرپور کی بڑی تعداد بیرون ممالک بالخصوص برطانیہ اور یورپ میں آباد ہے جو وہاں کے سیاسی اورمعاشی نظام میں موثر کردار ادا کرنے کے علاوہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بھی اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے پوری کررہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ برطانوی اور یورپی پارلیمنٹ میں کشمیریوں کی نمائندگی سے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے اٹھائی جانے والی آواز بڑی اہمیت کی حامل ہے اس حوالے سے بین الاقوامی سطح پر مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے کی کاوشیں رنگ لا رہی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں کشمیری قیادت کو قید وبند کی صعوبتوں میں رکھاگیا ہے کشمیری حریت لیڈر برہان مظفر وانی کی شہادت کے بعد مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو لگا کر کشمیریوں کو ان کے گھروں میں اس لئے قید کررکھا ہے کہ وہ حق کی آواز دنیا کے سامنے پیش نہ کرسکیں ۔انہوں نے کہا کہ بھارت کی ظالم افواج نہتے کشمیریوں کو پیلٹ گن کے ذریعے بصارت سے محروم کررہی ہے لیکن وہ کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو کم نہیں کرسکے۔ مقبوضہ کشمیر میں جاری انقلاب اور آزاد ی کا رنگ بھی پاکستان اور آزاد کشمیر کے پرچم کے رنگ جیسا ہے آج بھی شہید ہونے والوں کو پاکستانی پرچم کے کفن میں دفن کیا جاتا ہے ۔انھوں نے کہاکہ تحریک آزادی کشمیر کی کامیابی کے لیے پڑھے لکھے نوجوانوں کو اپنا موثر کردار ادا کرنا ہوگا تب جاکر ہم اپنے کشمیری بھائیوں کو بھارتی پنجہ استبداد سے نجات دلا سکتے ہیں

Scroll To Top