کٹھ پتلی حکومت نے علی گیلانی ،میرواعظ اوریاسین ملک کے درمیان ملاقات اور مشاورت پر پابندی عائد کر دی

leaders

سری نگر(یو این پی) مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی حکومت نے آزادی پسند رہنماوں سیدعلی گیلانی ،میرواعظ عمرفاروق اورمحمدیاسین ملک کے درمیان ملاقات اور مشاورت پر پابندی لگادی ان رہنماوں کو ملنے سے روک دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق ان رہنماوں کے درمیان ملاقات گزشتہ روز طے تھے تاہم حریت کانفرنس گ کے چیئرمین کوگھرسے باہرآنے کی اجازت نہیں دی گئی جبکہ لبریشن فرنٹ چیئرمین کوحیدرپورہ سے واپس بھیج دیاگیا۔خیال رہے مزاحمتی لیڈرشپ کے مشترکہ احتجاجی کلینڈرکی معیادجمعرات کو ختم ہوگی اورممکنہ طورمجوزہ میٹنگ میں تین بڑے حریت رہنماآئندہ کے لائحہ عمل کوآپس میں زیرغورلاتے ۔ وادی میں گزشتہ لگ بھگ 6ماہ سے مشترکہ طورمزاحمتی جدوجہدکی کمان سنبھالے ہوئے تین حریت قائدین سیدعلی گیلانی ،میرواعظ عمرفاروق اورمحمدیاسین ملک کے درمیان بدھ کوبعددوپہر3بجے ایک اہم میٹنگ حریت گ کے محبوس چیئرمین سیدعلی گیلانی کی رہائش گاہ واقع رحمت آبادحیدرپورہ میں طے تھی لیکن اس میٹنگ پرانتظامیہ کی ہدایت پرپولیس نے پابندی لگادی ۔ رواں جدوجہد کے حوالے سے آئندہ کالائحہ عمل اس میٹنگ میں زیرغور لانا مقصود تھا۔ذرائع نے بتایا کہ تینوں مزاحمتی لیڈران حیدر پورہ میں بعد دوپہر 3بجے ملنے والے تھے اور اسی مقصد کے تحت حریت ع چیئر مین میر واعظ عمر فاروق نے اپنی رہائش گاہ میر واعظ منزل واقع نگین حضرتبل سے حید رپورہ روانہ ہونے کی کوشش کی لیکن گھر میں نظر بند حریت ع چیئر مین کو رہائش گاہ سے باہر آنے کی اجازت نہیں دی گئی۔ میر واعظ نے اسکی تصدیق کرتے ہوئے بتایاکہ مجھے اور محمد یاسین ملک کو بعد دوپہر3بجے حیدر پورہ میں بزرگ حریت قائد سید علی گیلانی سے ملنا تھا لیکن مجھے گھر سے باہر آنے کی اجازت نہیں دی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ طے شدہ میٹنگ میں رواں جدوجہد کے حوالے سے آئندہ کا لائحہ عمل زیر غورلایا جانا تھا لیکن اس اہم میٹنگ کو ہونے نہیں دیا گیا۔ طے شدہ میٹنگ میں شرکت کیلئے لبریشن فرنٹ چیئر مین محمد یاسین ملک تقریبا3بجے سہ پہر حیدر پور ہ پہنچے تاہم انہیں یہاں موجود پولیس اور فورسز نے سید علی گیلانی کی رہائش گاہ کی طرف جانے کی اجازت نہیں دی۔ لبریشن فرنٹ کے ذرائع نے اسکی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ سید علی گیلانی ، میر واعظ عمر فارو ق اور ملک یاسین کے درمیان تین بجے حیدر پورہ میں اہم میٹنگ طے تھی اور اسی لئے محمد یاسین ملک مقرر ہ وقت پر حیدر پورہ پہنچے لیکن انہیں یہاں حریتگ چیئر مین کی رہائش گاہ کے اندر جانے کی اجازت نہیں دی گئی۔ محمد یاسین ملک حیدر پورہ پہنچے تھے لیکن یہاں پہلے پولیس اور فورسز نے بزرگ قائد سید علی گیلانی کی رہائش گاہ کی طرف آنے والی سڑکوں پر رکاوٹیں کھڑی کی تھیں۔ ذرائع نے بتایا کہ محمد یاسین ملک کو راستے میں روکا گیا اور انہیں آگے جانے کی اجازت نہیں دی گئی جبکہ حریتگ ذرائع کے مطابق سید علی گیلانی کی رہائش گاہ کے باہر ہی گیٹ کو پولیس اور فورسز نے باہر سے ہی بند رکھا تھااور کسی بھی شخص کو اندر جانے کی اجازت نہیں دی گئی۔
Scroll To Top