اگر آپ دن میں ایک گلاس سے زیادہ کوک یا ڈائٹ کوک پیتے ہیں تو اپنے بارے میں یہ انتہائی تشویشناک خبر ضرور پڑھ لیں

20110901-coca-cola-mexican-coke-taste-test-1

سٹاک ہوم(مانیٹرنگ ڈیسک)بہت سے لوگ شوگر والے مشروبات کی جگہ ڈائٹ مشروبات استعمال کرتے ہیں اور خیال کرتے ہیں کہ اس سے وہ ذیابیطس جیسی بیماریوں سے محفوظ رہیں گے اور ان کی صحت بہتر ہو گی مگر سویڈن کے سائنسدانوں نے اپنی نئی تحقیق میں لوگوں کا یہ خیال غلط ثابت کرتے ہوئے ڈائٹ کوک اور دیگر ایسے مشروبات کے متعلق بھی انتہائی خطرناک انکشاف کر دیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے بتایا ہے کہ ڈائٹ مشروبات بھی انسانی صحت کے لیے اتنے ہی مضر ہیں جتنے عام میٹھے والے ڈرنکس، اور جو لوگ روزانہ ڈائٹ ڈرنکس کے دو گلاس پیتے ہیں ان کے ذیابیطس کے مرض کا شکار ہونے کے امکانات دو گنا ہو جاتے ہیں۔

اگر آپ سیاہ چاکلیٹ روزانہ کھائیں گے تو اس خطرناک ترین بیماری سے محفوظ رہیں گے، سائنسی تحقیق میں حیران کن انکشاف
سویڈن کے کیرولنسکا انسٹیٹیوٹ کے سائنسدانوں نے اس تحقیق کے لیے 2ہزار 874افراد کا طبی معائنہ کیا اور پھر ایک سال کے لیے انہیں اپنی غذائی عادات ڈائری میں نوٹ کرنے کو کہا۔سال بعد سائنسدانوں نے ان کی ڈائری سے ان کی غذائی عادات کا تجزیہ کیا اور ان کا دوبارہ طبی معائنہ بھی کیا۔ اس تحقیق سے وہ اس نتیجے پر پہنچے کہ کیلوری فری مشروبات سے بھوک زیادہ لگتی ہے اور وہ ہمیں میٹھا کھانے پر اکساتے ہیں۔ اس کے علاوہ ان میں موجود مصنوعی مٹھاس آنتوں کے بیکٹیریا پر اثرانداز ہوتی ہے چنانچہ یہ دونوں عوامل شوگر کے امکانات کو بڑھاتے ہیں۔ اس تحقیق میں ماہرین نے دیکھا کہ سال بھر جو لوگ روزانہ دو گلاس ڈائٹ مشروبات پیتے رہے ان کے ذیابیطس میں مبتلا ہونے کے امکانات دو گناہو چکے تھے، جبکہ جو لوگ شوگر والے مشروبات اور ڈائٹ ڈرنکس دونوں روزانہ دو گلاس پیتے رہے ان میں یہ خطرہ 2.4گنا بڑھ چکا تھا۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اگر آدمی روزانہ 5شوگر فری ڈرنکس پیتا ہے تو اس کے ذیابیطس کا شکار ہونے کے امکانات ساڑھے 4گنا بڑھ جاتے ہیں

Scroll To Top