ایک جیسے IMEIنمبرز والے موبائل فون سیٹ بند کرنے کا فیصلہ

same-imei

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان میں نہ صرف بیرون ممالک سے غیر قانونی طور پر لائے جانے والے موبائل فون ہینڈ سیٹس کے IMEIنمبرتبدیل کر کے انہیں فروخت کرنے کا سلسلہ جاری ہے بلکہ لاکھوں کی تعداد میں ایسے چینی ہینڈ سیٹ بھی مارکیٹ میں دستیاب ہیں کہ جو منفردIMEIنمبرز کی لازمی شرط پوری نہیں کرتے۔سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی و ٹیلی کمیونیکیشن نے گزشتہ روز اس صورتحال کو سکیورٹی کیلئے ایک خطرہ قرار دیتے ہوئے جعلی اور ملتے جلتے IMEIنمبر والے تمام ہینڈ سیٹس کو بلاک کرنے کی سفارش کر دی ہے ، ویب سائیٹ پر پاکستانی کی رپورٹ کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی کا اجلاس سینیٹر شاہی سید کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں نقلی IMEIنمبر والے ہینڈ سیٹس کی وجہ سے پیدا ہونے والے سکیورٹی مسائل کا جائزہ لیاگیا ۔کمیٹی کی جانب سے ٹیلی کام کمپنیوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ نقلیIMEIنمبر والے تمام ہینڈ سیٹ بلاک کرنے کیلئے اقدامات کئے جائیں تا کہ ان کی مدد سے کئے جانے والے جرائم کا قلع قمع کیا جا سکے ، رپورٹ کے مطابق IMEIنمبر بین الاقوامی ادارے جی ایس ایم اے کی جانب سے فروخت کئے جاتے ہیں لیکن سستے ہینڈ سیٹ بنانے والی کمپنیاں ہر ہینڈ سیٹ کیلئے علیحدہ نمبر خریدنے کی بجائے ایک ہی IMEIنمبر کے ہزاروں سیٹ تیار کر دیتی ہے ہمارے ہاں اس طرح کے سیٹ چینی موبائل فون کے نام سے عام دستیاب ہیں ۔ٹیلی کام کمپنیاں بھی ایک ہی IMEIنمبر استعمال کرنے والے ایک سے زائد ہینڈ سیٹس کو اپنا نیٹ ورک استعمال کرنے کی اجازت دیتی ہیں جس کی وجہ سے یہ مسئلہ جوں کا تو ں ہے
Scroll To Top