پولیس کی گاڑی میں لکڑی سمگلنگ کرنے پر تین پولیس اہلکار معطل، پولیس کا پیٹی بھائیوں کی ایف آئی آر درج کرنے سے انکار

havelian_29

آٹھ مقام (بیورو رپورٹ) پولیس کی گاڑی میں لکڑی سمگلنگ تین پولیس اہلکار معطل، پولیس کا پیٹی بھائیوں کا ایف آئی آر درج کرنے سے انکار۔ تفصیلات کے مطابق وادی نیلم میں پولیس کی گاڑیوں میں سرسبز دیودار کے درختان کاٹ کرلکڑی کی سمگلنگ طویل عرصہ سے جاری ہے۔ دو دن قبل رات گیارہ بجے بانڈی چوکی پولیس کی کی گاڑی میں قیمتی لکڑی سمگل کی جا رہی تھی کہ چھاپہ مار برانچ کی طرف سے ہیڈکواٹر مظفرآباد کو اطلاع دی گئی کہ بانڈی چوکی پولیس کی گاڑی جنگلات کے بیرئیر توڑ کر مظفرآباد کی طرف جارہی ہے۔ محکمہ جنگلات کی طرف سے پٹہکہ کے مقام پر ناکہ لگایا گیا لیکن پولیس وردی میں ملبوس چار اہلکاروں نے زبردستی محکمہ جنگلات کے اہلکاروں لو زدکوب کر کے گاڑی نکال کر بھاگنے میں کامیاب ہو گئے محکمہ جنگلات کی طرف سے ڈی آئی جی راشد نعیم کو اطلاع دی گئی جن کی ہدایت پر تھانہ پولیس پنج گراں نے بائی پاس روڈ سے بانڈی پولیس کی گاڑی کو دھر لیا ہے۔ لکڑی اور فرنیچر بانڈی چوکیآفیسر میر سعید کے گھر ان لوڈ کیا گیا ہے۔ اس سے قبل بھی اس ہی گاڑی پر ایک سینئر آفیسر کے گھر بھی تین لوڈ لکڑی کے ڈراپ کر چکی ہے۔ ضلعی ہیڈکواٹر آٹھمقام میں آفیسران سرسبز درختان کٹوا کر فرنیچر بنا کر جعلی فارموں پر لکڑی سمگلنگ کا دھندہ طویل عرصہ سے جاری ہے۔ مارچ میں ایک آفیسر نے ایک ماہ میں ملی بھگت سے27 ٹرک لکڑی و فرنیچر سمگل کیا تھا۔ عوام کے احتجاج پر مذکورہ آفیسر کا تبادلہ کیا گیا تھا۔ آٹھمقام صنعتی تربیتی مرکز میں آفیسران فرنیچر بناکر سمگلنگ کا دھندہ کرتے ہیں۔ عوامی حلقوں کی طرف سے حکومت آزاد کشمیر اور سپیکر اسمبلی شاہ غلام قادر سے نوتس لینے کی استدعا کی ہے۔

 

Scroll To Top