برطانوی دینی ادارے میں طالبات سے نازیبا الفاظ استعمال کرنے والا مولوی گرفتار

Arrested

برمنگھم(کے این آئی)برطانیہ میں دینی ادارے میں طالبات کے ساتھ نازیبا الفاظ میں گفتگو کرنے والا مولوی36سال بعد آخر کار رگڑے میں ہی گیا،ڈولی کے علاقے ناردرن ٹاؤن ڈڈیال آزادکشمیر کے رہائشی 57سالہ امام مسجد قاری حافظ الرحمان اپر الزام تھا کہ وہ 1980میں قرآن پڑھانے کے دوران 8سال کی 2لڑکیوں کو غلیظ گالیوں سے پکارتا تھا تاہم بچیاں اس وقت چھوٹی تھیں اور برداشت کرتی رہیں،تاہم2012میں ایک چالیس سالہ عورت نے امام حافظ الرحمان کیخلاف پولیس کو بتایا ،پولیس نے تحقیقات کے بعد 2014میں حافظ الرحمان کو گرفتار کر لیا40سالہ عورت کے مطابق وہ تیس سال قبل گالیاں دیتا اور نازیبا زبان استعمال کرتا تھا تاہم پولیس نے دوسری عورت کو بھی تلاش کر کے اس کو شامل تفتیش کر لیا، جنوری2016میں حافظ رحمان کو باقاعدہ چارج کر لیاگیا تاہم کچھ ماہ کے ٹرائل کے بعد گزشتہ جمعہ کے روز ولور ہیمٹن کراؤن کورٹ نے اس پر لگائے گئے الزامات کی روشنی میں اس کو قصور وار ٹھہرا دیا ،سزا بعد میں سنائی جائے گی
Scroll To Top